Tag Archives: imran khan

سپریم کورٹ نے وزیراعظم کی نااہلی کیلئے دائر اپیل مسترد کردی

اسلام آباد(ویب ڈیسک)سپریم کورٹ نے وزیراعظم عمران خان کی نااہلی کے لیے دائر اپیل مسترد کردی۔سپریم کورٹ میں وزیراعظم عمران خان کی اہلیت سے متعلق فیصلے پر نظر ثانی درخواست کی سماعت ہوئی۔ مسلم لیگ (ن) کے رہنما حنیف عباسی کے وکیل اکرم شیخ نے کہا کہ عمران خان نے عدالت سے کئی حقاق چھپائے، کاغذات نامزدگی میں غلط بیانی کی اور جمائما کے اثاثے ظاہر نہیں کیے، عمران خان نے ٹکڑوں میں دستاویزات فراہم کیں جو غیر تصدیق شدہ اور ناقابل قبول ہیں۔وکیل اکرم شیخ نے فیصلے پر نظر ثانی کے دلائل میں نواز شریف کے خلاف مقدمے کا بھی حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ 5 رکنی بینچ نے کاغذات نامزدگی میں اقامہ چھپانے پر نواز شریف کو متفقہ طور پر نااہل کیا، اس کیس میں 5 رکنی بینچ کا فیصلہ تین رکنی بینچ پر لازم تھا۔جسٹس عمرعطا بندیال نے کہا کہ پاناما اور عمران خان کیس کا موازنہ درست نہیں، ہر کیس کے اپنے حقائق ہوتے ہیں۔ چیف جسٹس نے کہا کہ اقامہ پر نااہلی پانچ رکنی بینچ کی نہیں تھی بلکہ جے آئی ٹی تحقیقات کے بعد تین رکنی بینچ نے نااہل کیا۔اکرم شیخ نے کہا کہ سیاسی جماعت کے اکاو¿نٹس کی پڑتال کے لیے الیکشن کمیشن کو عدالت نے پانچ سال تک محدود کر دیا۔ چیف جسٹس نے کہا کہ اکاو¿نٹس کی پڑتال کی قانون میں میعاد مقرر نہیں، پانچ سال تک اکاو¿نٹس کی پڑتال کا فیصلہ ہر سیاسی جماعت پر لاگو ہو گا، عدالت نے سب کے لیے یکساں پیمانہ مقرر کیا ہے، عدالت پانچ سال کا وقت دینے کے موقف پر قائم ہے۔سپریم کورٹ نے درخواست ناقابل سماعت قرار دیتے ہوئے خارج کردی۔

ہمارے ارکان اسمبلی نے 60کروڑ لئے ،عمران خان کا چونکا دینے والا انکشاف

اسلام آباد (این این آئی) پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے سینیٹ الیکشن میں ووٹ بیچنے والے پارٹی کے بیس ارکان کو شوکاز نوٹس جاری کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہاہے کہ اگر ان اراکین نے جواب نہ دیا تو پارٹی سے نکال کر معاملہ نیب کوبھیج دینگے، تیس سے چالیس سال ووٹ بکتا رہا ہے ، پاکستانی تاریخ میںہم نے پہلی بار ایکشن لیا ہے، میںنہ بکنے والے اراکین کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں، نواز شریف کو ملک سے باہر نہیں جانے دینا چاہئے تھا، یہ کرپشن کی یونین ہے، جمہوریت کے پیچھے چھپ رہے ہیں، پاکستان میں پہلی مرتبہ طاقتور کو قانون کی گرفت میں لایا گیا، جنوبی پنجاب کے علیحدہ صوبے کی حمایت کرتے ہیں،جنوبی پنجاب محاذ سے بات چیت چل رہی ہے، ٹکٹ دینے کیلئے کوئی پیسہ مانگ رہاہے تو بتائیں اس کیخلاف کارروائی ہوگی، 29 اپریل کو پتہ چل جائے گا کہ عوام کس کے ساتھ ہیں۔ بدھ کو بنی گالہ میں پی ٹی آئی کی مرکزی قیادت کا اجلاس ہوا جس میں پرویز خٹک، شاہ محمود قریشی، جہانگیر ترین ، خیبرپختونخوا کے صوبائی وزراءسمیت سینیٹر اور اراکین قومی اسمبلی شریک ہوئے۔ اجلاس کے دوران وزیراعلی پرویز خٹک نے سینیٹ انتخابات میں تحریک انصاف کے ارکان صوبائی اسمبلی کی ہارس ٹریڈنگ سے متعلق رپورٹ پیش کی ۔ رپورٹ میں ان تمام اراکین اسمبلی کے نام تھے جنہوں نے پیسوں کے عوض اپنا ووٹ تحریک انصاف کی بجائے دوسری جماعتوں کے امیدواروں کو دیا۔ رپورٹ میں بتایا گیا کہ تحریک انصاف کے 30 ارکان کو ہارس ٹریڈنگ ڈیل کی پیشکش ہوئی جن میں 15 ارکان صوبائی اسمبلی کو ووٹ کے بدلے پیسے دیئے گئے جبکہ ایک رکن نے ڈیل کے بعد اپنا ارادہ بدل دیا۔ ووٹ کے بدلے ناصرف پی ٹی آئی بلکہ اے این پی اور قومی وطن پارٹی کے ارکان کو بھی رقم دی گئی، اس سارے عمل میں ایک ارب 20 کروڑ روپے تقسیم ہوئے اور تحریک انصاف کے ارکان اسمبلی نے 60 کروڑ روپے وصول کئے۔رپورٹ میں بتایا گیا کہ27 فروری کو خیبر پختونخوا اسمبلی میں پی آٹی آئی کے3 ارکان نے 11 کروڑ 40 لاکھ روپے وصول کئے۔28 فروری کو 5 ارکان اسمبلی نے4،4 کروڑ، یکم اور2 مارچ کو6 ارکان نے 3،3 کروڑ روپے لئے۔ 2 مارچ کو اسلام آباد میں پی ٹی آئی کی ایک خاتون رکن صوبائی اسمبلی پیسے وصول کرنے کےلئے اسلام آباد پہنچی، اس نے 3 کروڑ روپے لینے سے انکار کرتے ہوئے 5 کروڑ روپے کا مطالبہ کیا لیکن اسے 4 کروڑ روپے کی پیشکش کی گئی۔اجلاس کے بعد میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے عمران خان نے کہا سینیٹ میں ووٹ بیچنے والے ارکان کیخلاف ایکشن کا فیصلہ کیا تھا جس کے بعد الزامات کی پوری تحقیقات کی۔ سینیٹ الیکشن میں ووٹ کی خریدوفروخت پر کوئی ایکشن نہیں لیتا تھا۔ جنہوں نے اپنا ووٹ بیچا وہ ہماری پارٹی میں مزید نہیں رہ سکتے۔ بیس ایم پی ایز کو پارٹی سے نکالنا برداشت کرسکتے ہیں مگر ضمیر فروشی نہیں، ہم نے ووٹ بیچنے والوں کو نہیں چھوڑنا ۔ جنہوں نے اپنا ووٹ نہیں بیچا وہ شاباش کے مستحق ہیں۔عمران خان نے اعلان کیا کہ بیس ارکان کو شوکاز نوٹس جاری کیا جائےگا۔ شوکاز نوٹس کا جواب نہیں ملا تو نام نیب میں بھیجیں گے۔عمران خان نے کہا کہ جس جس ایم پی اے نے ووٹ بیچا اس کا نام نیب کو دے رہے ہیں تاکہ ان کے بینک اکاﺅنٹس چیک کریں ۔انہوں نے بتایا کہ ووٹ بیچنے والوں میں نرگس علی، دینا ناز، نگینہ خان ، فوزیہ بی بی ، نسیم حیات ، سردار ادریس ، عبید مایار ، زاہد درانی، عبدالحق ، قربان خان، امجد آفریدی، عارف یوسف، جاوید نسیم، یاسین خلیل، فیصل زمان، سمیع علی زئی ،معراج ہمایوں ، خاتون بی بی، بابر سلیم اور وجیہہ الدین شامل ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں عمران خان نے کہا کہ نواز شریف کو ملک سے باہر نہیں جانے دینا چاہئے تھا۔ انہوں نے وزیراعظم پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ایک ملزم کو پروٹوکول دیا جارہا ہے ۔ نوازشریف کے ملک سے باہر جانے پر سخت تحفظات ہیں، انہوں نے کہا کہ نواز شریف کیخلاف کیسز آخری مراحل میں ہیں۔ بیرون ملک جانے سے ان کے کیس میں فیصلہ نہیں آسکے گا۔ ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ ٹکٹ دینے کیلئے کوئی پیسہ مانگ رہاہے تو مجھے بتائیں اس کیخلاف کارروائی ہوگی۔عمران خان نے کہا کہ 29 اپریل کو پتہ چل جائے گا کہ عوام کس کے ساتھ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میرا ایمان ہے کہ 29 اپریل کو مینار پاکستان ہونیوالا جلسے میں اتنے لوگ شرکت کرینگے کہ پہلے کسی جلسے میں اتنے لوگ شریک نہیں ہوئے ہونگے ۔ انہوں نے کہا کہ جنوبی پنجاب کے لوگ علیحدہ صوبہ چاہتے ہیں ان کے مطابات ماننے چاہئیں۔ ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ ووٹ کو عزت دو کے سیمینار کے موقع پر نواز شریف کیساتھ موجود لوگوں کو ڈر ہے کہ کل ان کی باری آئیگی ، یہ لوگ ووٹ کے پیچھے چھپ رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں پہلی مرتبہ ایک طاقتور کو قانون کی گرفت میں لایا گیا ہے۔ حکومت منی لانڈرنگ میں ملوث نواز شریف کو بچانے کی کوشش کررہی ہے ۔ ایک سوال پر عمران خان نے کہا کہ (ن) لیگ سے پی ٹی آئی میں آنیوالے وجیہہ الزمان نے بھی ووٹ بیچا ہے جب سے سینیٹ انتخابات شروع ہوئے ہیں اراکین اپنے ووٹ بیچتے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ انتخابی اصلاحات کمیٹی میں سینیٹ انتخابات کے طریقہ کار میں تبدیلی کی کوشش کی ۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف جواب دینے کی بجائے اداروں پر حملہ کررہے ہیں ۔ ایک سوال پر عمران خان نے کہا کہ تحریک انصاف کا ٹکٹ لینے کیلئے اگر کسی نے پیسہ دیا تو وہ ضائع ہوگا۔گزشتہ الیکشن میں ٹکٹ پر توجہ نہیں دی ، اس بار کسی امیدوار کے حوالے سے مطمئن نہ ہوا تو ٹکٹ نہیں دونگا۔

نوازشریف بند گلی نہیں اڈیالہ جیل کی طرف جارہے ہیں، عمران خان

پشاور(ویب ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ نواز شریف کو بند گلی کی طرف نہیں اڈیالہ کی طرف بھیجا جارہا ہے۔وزیر اعلی ہاؤس پشاور میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ فاٹا اصلاحات پرعمل درآمد ہوجانا چاہیے تھا مگراب تک نہیں ہوا، اگر الیکشن جیت کر اقتدارمیں آگئے تو فاٹا کو خیبر پختونخوا میں ضم کردیں گے اور 3 سے 5 ماہ میں قبائلی علاقوں میں بلدیاتی انتخابات کرائیں گے، فاٹا کے حوالے سے جلد آرمی چیف قمر جاوید باجوہ سے ملاقات کروں گا ، جس میں ان سے فاٹا کے 3 نکات پر بات ہوگی، ان کے سامنے فاٹا میں سیکورٹی چیک پوسٹ کم سے کم کرنے، بارودی سرنگوں کے خاتمے اور لاپتہ افراد کا معاملہ  اٹھاؤں گا۔ کئی گھرانوں کے لوگ غائب ہیں اور ان کے ماں باپ پریشان ہیں۔چیئرمین تحریک انصاف نے کہا کہ شہباز شریف کو قرضے کی بات کرتے ہوئے شرم آنی چاہئے، نواز اور شہباز نے جتنا قرضہ لیا ہے پورے پاکستان کی تاریخ میں کسی نےنہیں لیا، شہباز شریف سوچ رہےہیں کہ وہ خیبر پختونخوا میں بھی پیسے بناسکتے ہیں، لاہور اور ملتان کی میٹرو بس سروس کے خسارے سے ہر سال شوکت خانم جیسے دو نئے اسپتال بنائے جاسکتے ہیں لیکن پشاور میں میٹرو منصوبہ خسارے کا شکار نہیں ہوگا کیونکہ اس منصوبے پر کوئی سبسڈی نہیں ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ آئندہ حکومت پی ٹی آئی بنائے گی، نوازشریف کو بند گلی کی طرف نہیں اڈیالہ کی طرف دھکیلا جارہا ہے۔

عمران خان کا چیئرمین سینیٹ کے لیے بلوچستان کے امیدوار کی مکمل حمایت کا اعلان

اسلام آباد(ویب ڈیسک)چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے سینیٹ کے چیئرمین کے لیے بلوچستان کے سینیٹر کی مکمل حمایت کا اعلان کیا ہے۔اسلام آباد میں وزیراعلیٰ بلوچستان عبدالقدوس بزنجو کے ہمراہ مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ کوشش ہے کہ چیئر مین سینیٹ بلوچستان سے ہو اور اس حوالے سے تحریک انصاف بلوچستان کے سینیٹر کی مکمل حمایت کرے گی۔عمران خان کا کہنا تھا کہ اگر بلوچستان سے چیئرمین سینیٹ منتخب ہو جاتا ہے تو یہ بہت بڑی کامیابی ہو گی کہ ملکی تاریخ میں پہلی بار چیئرمین سینیٹ بلوچستان سے آیا۔ان کا کہنا تھا کہ بلوچستان کے عوام کو اپنے ساتھ ہونے والی احساس محرومی کا اندازہ ہے اور اگر چیئرمین سینیٹ بلوچستان سے آ جاتا ہے تو یہ اچھا اقدام ہو گا۔اس موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے وزیراعلیٰ بلوچستان کا کہنا تھا کہ بلوچستان سے سینیٹر منتخب کروانے کے لیے سب سے پہلے آواز بلند کرنے پر عمران خان اور تحریک انصاف کے شکر گزار ہیں۔بلاول بھٹو زرداری نے بھی گزشتہ روز سوشل میڈیا پر اپنے پیغام میں کہا تھا کہ ان کی جماعت بلوچستان کے لیے قربانی دینے پر راضی ہے جو ایک اچھی چیز ہے۔اس موقع پر وزیراعلیٰ بلوچستان نے چیئرمین سینیٹ کے لیے دو ناموں کا اعلان بھی کیا۔ انہوں نے بتایا کہ انوارالحق کاکڑ اور صادق سنجرانی ہمارے امیدوار ہیں اور جلد کسی ایک نام پر اتفاق کر لیا جائے گا۔

پی ٹی آئی سینیٹرز پیپلز پارٹی اور (ن) لیگ کو ووٹ نہیں دیں گے، عمران خان

 اسلام آباد(ویب ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی کور کمیٹی کا متفقہ فیصلہ ہے کہ ہمارے سینیٹرز پیپلزپارٹی اور (ن) لیگ کو ووٹ نہیں دیں گے۔اسلام آباد میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے پاکستان تحریک انصاف کے رہنما عمران خان کا کہنا تھا کہ تحریک انصاف فاٹا اور بلوچستان کے ساتھ کھڑی ہے، بلوچستان میں احساس محرومی ہے لہذا بلوچستان سے چیئرمین اور فاٹا سے ڈپٹی چیئرمین ہونا چاہیے۔ سینیٹ ایک کینفیڈریشن کی حمایت کرتا ہے جب کہ تحریک انصاف کے اراکین متفق ہیں کہ بلوچستان اور فاٹا کو موقع دیا جائے، فاٹا اور بلوچستان نے بہت قربانیاں دی ہیں۔عمران خان کا کہنا تھا کہ پرویز خٹک، جہانگیرترین، اسد عمر اور دیگر رہنما فاٹا سینیٹرز سے ملاقات کر رہے ہیں، پی ٹی آئی وفد بلوچستان اور فاٹا سینیٹرز سے اس فیصلہ پر کھڑا رہنے کا کہیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی کور کمیٹی کا یہ متفقہ فیصلہ ہے کہ ہمارے سینیٹرز پیپلزپارٹی اور (ن) لیگ کو ووٹ نہیں دیں گے جب کہ ہم امید کرتے ہیں پیپلز پارٹی بھی بلوچستان اور فاٹا کی حمایت کرے گی۔

سینیٹ الیکشن میں پیسہ چلتا ہے، مجھے بھی رقم لینے کی پیشکش ہوئی، عمران خان

پشاور(ویب ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ سینیٹ الیکشن میں پیسہ چلتا ہے، مجھے بھی سینٹ الیکشن میں آفر ہوئی تھی۔وزیرِ اعلی ہاؤس پشاور میں پارلیمانی پارٹی کی اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا کہ امریکا میں براہ راست انتخاب کے ذریعے سینٹر منتخب ہوتا ہے لیکن ہمارے یہاں سینیٹ الیکشن میں پیسہ چلتا ہے۔ پیسے کے بل بوتے پر سینیٹر آتا ہے تو وہ کرپشن ہی کرتا ہے۔ اس نظام کر بدلنا ہے جو ہارس ٹریڈنگ کی اجازت دیتا ہے۔ انشاء اللہ 2018ء کا الیکشن جیت کر سینیٹ کے براہ راست الیکشن کرائیں گے۔اس موقع پر وزیرِ اعلی خیبر پختونخوا پرویز خٹک نے کہا کہ پچھلے سینیٹ الیکشن میں بھی بلا مقابلہ امیدوار منتخب کرنے کا کہا تھا، مگر اپوزیشن اتفاق نہیں کیا۔ اس دفعہ سپیکر نے تمام پارٹیوں سے رابطہ کیا کہ اپنے حصے کے مطابق سینیٹ الیکشن میں بلا مقابلہ اپنے امیدوار منتخب کریں، پھر بھی کسی نے اتفاق نہیں کیا۔

کپتان کو وزیر اعظم بنوانے کیلئے کونسی قوتیں متحریک ،،،برطانوی جریدہ کے انکشافات سے پی ٹی آئی حلقوں میں بھونچال

اسلام آباد(ویب ڈیسک)طالبان پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان کو پاکستان کا لیڈر بنانا چاہتے ہیں، ان کی کئی قدریں ڈونلڈ ٹرمپ سے مشترک ہیں، ٹرمپ ہی کی طرح خواتین کو جنسی طور پر ہراساں کرنے کا الزام بھی عائد ہو چکا، بنی گالہ میں موجود رہائش گاہ جیمز بونڈ کی فلموں کی طرح ولن کا اڈہ لگتی ہے، عمران خان بچپن میں خود کو بدصورت سمجھتے تھے، والد کو شوکت خانم ہسپتال کےبورڈ سے نکال دیا تھا، والد کے ساتھ رسمی تعلقات تھے، جب کہ والد اور والدہ کی آپس میں بات چیت بند تھی۔ والد کی وفات کے بعد ان کا لاہور زمان پارک میں گھر مسمار کروا دیا، برطانوی جریدے کی رپورٹ میں انکشافات۔ تفصیلات کےمطابق برطانوی جریدے سنڈے ٹائمز نے دعویٰ کیا ہے کہ طالبان پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان کو پاکستان کا لیڈر بنوانا چاہتے ہیں ، طالبان چاہتے ہیں کہ عمران خان پاکستان کے سربراہ کے طور پر سامنے آئیں۔ برطانوی جریدے کی رپورٹ میں عمران خان کو امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی طرح قرار دیا گیا ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ عمران خان امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی طرح بوڑھے مگر دونوں اپنے بالوں کی بہت فکر کرتے ہیں۔ عمران خان پر امریکی صدر ٹرمپ ہی کی طرح خواتین کو جنسی طور پر ہراساں کرنے کا الزام بھی لگ چکا ہے اور جب ان سے عائشہ گلالئی سے متعلق سوال کیا گیا تو ان کے ہاتھوں میں تسبیح موجود تھی جس کے دانے انہوں نے اضطراری کیفیت میں تیزی سے گھمانے شروع کر دئیے اور کہا کہ عائشہ گلالئی نے پیسوں کیلئے ان پر الزام عائد کیا ہے۔ رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ عمران خان ایک اور جریدے ڈیلی مرر کیلئے مختصر لباس میں بھی تصاویر کھچوا چکے ہیں، عمران خان کا انٹرویو کرنے والے صحافی کا کہنا تھا کہ عمران خان اور ڈونلڈ ٹرمپ دونوں مشابہ معلوم ہوتے ہیں مگر عمران خان نےڈونلڈ ٹرمپ کو بورنگ شخص قرار دیتے ہوئے کہا کہ ان میں روحانیت بالکل نہیں جبکہ میں اگر روحانیت کی جانب راغب نہ ہوتاتو سیاست میں کبھی نہ آتا۔ صحافی کا کہنا تھا کہ عمران خان پاکستان میں چائنہ ماڈل لا نا چاہتے ہیں مگر اس حوالے سے ان کے پاس کوئی پلان نہیں ، اس معاملے پر جب ان کی پارٹی کے نائب صدر اس عمر سے بات کی گئی ان کا کہنا تھاکہ عمران خان کو اسٹریٹجی معاملات کا علم نہیں۔برطانوی جریدے کی رپورٹ میں اسلام آباد بنی گالہ میں عمران خان کی رہائش گاہ کو جیمز بونڈ فلموں کے ولن کے اڈے سے مشابہ قرار دیتے ہوئے عمران خان کے حوالے سے بتایا گیاہے کہ وہ خود کو پاکستان کی تاریخ کا سب سے زیادہ معروف آدمی سمجھتے ہیں۔ رپورٹ میں عمران خان کی ذاتی زندگی کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ وہ خود کو بچپن میں بدصورت سمجھتے تھے۔عمران خان کے والدین کے درمیان بات چیت بند تھی۔ عمران خان نے اپنے والد کو شوکت خانم اسپتال کے بورڈ سے نکال دیا تھا۔ عمران خان کے خاندان کے افراد بتاتے ہیں کہ عمران خان اور ان کے والد کے درمیان بات چیت بند تھی۔ جبکہ اس کا اعتراف خود عمران خان نے بھی کیا کہ ان کے اپنے والد سے رسمی سے تعلقات تھے۔عمران خان کے والد 2008میں انتقال کر گئے تھے جس کےبعد انہوں نے لاہور زمان پارک میں واقع اپنے والد کا گھر بھی مسمار کرادیا ہے۔

وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف سب سے بڑے ڈرامے باز ہیں ،عمران خان

اسلام آباد(ویب ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان نے وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کو سب سے بڑا ‘ڈرامے باز’ قرار دیتے ہوئے دعویٰ کیا ہے کہ وہ امریکیوں کو خوش کرنے کے لیے ہر روز نیا ہیٹ پہنتے ہیں۔اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ ‘پاکستان میں سب لوگ شلوار قمیض پہنتے ہیں، لیکن شہباز شریف نے اپنے سارے سوٹ نکالے ہوئے ہیں اور اسی لیے ہر روز نئے نئے ہیٹ (ٹوپی) پہنتے ہیں تاکہ امریکیوں کو یہ بتا سکیں کہ میں بھی ان ہی کی طرح ہوں۔عمران خان نے شریف برادران کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ، یہ دونوں بھائی دو دو مرتبہ بالترتیب وزیراعظم اور وزیراعلیٰ رہ چکے ہیں اور انہوں نے امریکیوں سے مطالبہ کیا کہ انہیں تیسری مرتبہ بھی باری دلوا دی جائے۔عمران خان نے دعویٰ کیا کہ ‘شہباز شریف نے گزشتہ دور میں امریکا سے حکومت بحال کروانے کی درخواست کی تھی۔پی ٹی آئی چیئرمین نے الزام عائد کیا کہ ‘شہباز شریف اور وزیر قانون پنجاب رانا ثناءاللہ نےانتہا پسندگروپوں کو پالا ہوا ہے۔امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے حال ہی میں پاکستان کو دی جانے والی دھمکی کے حوالے سے عمران خان کا کہنا ہے کہا امریکا اپنی 16 سالہ ناکامیوں کا ملبہ پاکستان پر ڈال رہا ہے، جبکہ پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں سب سے زیادہ قربانیاں دی ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ امریکا ہمیں 25 ارب روپے کے نام پر ذلیل کر رہا ہے، جبکہ اسحاق ڈار کے بیٹے کے دو ٹاور ہی 25 ارب روپے کے ہیں۔ساتھ ہی انہوں نے سابق وزیراعظم کا بھی حوالہ دیا اور کہا کہ نواز شریف کے 300 ارب روپے ملک سے باہر پڑے ہیں، جو وہ چوری کرکے لے گئے تھے۔عمران خان نے امریکا کے موجودہ رویے کا ذمہ دار اپنے ملک کے طبقہ اشرافیہ کو قرار دیتے ہوئے کہا کہ ‘ہمیں انڈین لابی کی ضرورت نہیں، ہمارے اپنے لیڈر ملک کو بدنام کرنے پر تلے ہوئے ہیں اور اس ملک کے ادارے مافیا کے ہاتھوں مفلوج ہیں۔پی ٹی آئی چیئرمین کا کہنا تھا کہ پاکستان دنیا کا وہ واحد ملک ہے جو افغانستان میں مکمل امن چاہتا ہے اور افغانستان کا امن پاکستان کے مفاد میں ہے۔اس سے قبل عمران خان نے پاک فضائیہ کے پہلے مقامی سربراہ سابق ایئرچیف مارشل اصغر خان کی وفات پر تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اصغر خان ایماندار، صادق اور امین تھے۔ان کا کہنا تھا، ‘مجھے خوشی ہوئی تھی کہ اصغرخان نے اپنی پارٹی پی ٹی آئی میں ضم کی تھی اور انہوں نے انتخابات میں دھاندلی پر بڑی جدوجہد کی۔عمران خان نے مزید کہا کہ اصغر خان کیس پر پوری طرح پیش رفت کریں گے۔

عمران خان نے نواز شریف کے بیرون ملک نیٹ ورک کو بے نقاب کر دیا ۔۔۔تہلکہ خیز انکشافات

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان نے سابق وزیرخزانہ اسحاق ڈار کو سابق وزیراعظم نواز شریف کا فرنٹ مین قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ ایک پورا مافیا ہے۔اسلام آباد میں پریس کانفرنس کے دوران عمران خان نے کہا کہ ‘اسحاق ڈار  پاکستان اور دبئی میں نواز شریف کے فرنٹ مین ہیں، جنہیں ملک سے نکالنے کے لیے شاہد خاقان عباسی کا جہاز دیا گیا، جبکہ امریکا میں ان کا فرنٹ مین سعید شیخ ہے’۔عمران خان نے پریس کانفرنس کے دوران کہا، ‘جب اسحاق ڈار اسکوٹر پر پھرتا تھا تو میں اُس وقت لندن میں فلیٹ لے رہاتھا’۔پی ٹی آئی چیئرمین کا کہنا تھا کہ اسحاق ڈار کی ایک کمپنی ایچ ٹی ایس کے دبئی میں 52 ولاز ہیں اور ترکی، عمان، سوئٹزرلینڈ اور انگلینڈ سے بھی اسحاق ڈار کی کمپنی میں پیسے آرہےہیں۔ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ کمپنی میں دیگر ملکوں سے بھی پیسے آرہے ہیں، اس کا مطلب یہ ہے کہ دیگر ملکوں میں بھی کمپنیاں ہیں۔عمران خان نے اسحاق ڈار کے استعفیٰ کے بعد نئے وزیر خزانہ کی تقرری نہ ہونے پر بھی تنقید کی اور کہا کہ حکومت نے نیا وزیر خزانہ نہیں بنایا بلکہ ایڈوائزر لگادیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ایل این جی کا کنٹریکٹ 15 ارب ڈالر کا ہے اور کہا جارہا ہے کہ ایل این جی کنٹریکٹ کنفیڈنشل کنٹریکٹ ہے۔ساتھ ہی انہوں نے سوال کیا، ‘کیا پبلک کے پیسے پر بھی کوئی کنفیڈنشل کنٹریکٹ ہوتا ہے؟’عمران خان کا کہنا تھا کہ ‘ان کو ڈر ہے کہ ان کا باقی پیسا جو دیگر ملکوں میں ہے وہ سارا پتا چل جائے گا، یہ ایک پورا مافیا ہے، یہ سب آپس میں ملے ہوئے ہیں اور انہوں نے ادارے تباہ کردیئے ہیں لیکن اب چیزیں سامنے آرہی ہیں’۔پی ٹی آئی چیئرمین نے کہا، ‘نوازشریف قوم کو پاگل سمجھتا ہے، آج ان کے ولاز ہیں اور میرے پاس لندن کا فلیٹ بھی نہیں ہے جبکہ میں نے 40 سال پرانے کنٹریکٹ دکھائے اور یہ بھی بتایا کہ فلیٹ کیسے بکا’۔عمران خان نے کہا کہ اقامہ منی لانڈرنگ کا ایک طریقہ ہے جبکہ اصل منی ٹریل حدیبیہ پیپر ملز کیس ہے۔ان کا مزید کہنا تھا، ‘حدیبیہ پیپر ملز پر جے آئی ٹی میں کئی چیزیں نکل آئی ہیں، اگر ثبوت نکل آئے تو کیس دوبارہ کھل جاتا ہے’۔پی ٹی آئی چیئرمین نے نواز شریف کی اپنی نااہلی کے خلاف شروع کی گئی تحریک کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ‘جس طرح عدلیہ پر حملے ہو رہے ہیں تو توہین عدالت کا قانون ختم کردیں، کیا یہ قانون صرف کمزوروں کے لیے ہے’۔عمران خان نے سوال کیا، ‘سپریم کورٹ کیوں ان کے دباؤ میں آرہی ہے؟’ساتھ ہی عمران خان نے سابق وزیراعظم نواز شریف کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا، ‘انہیں آج اعتراض ہے کہ انہیں بچانے کے لیے فوج نے مددکیوں نہیں کی’۔ان کا کہنا تھا، ‘یہ اپنی چوری بچانے کے لیے ملک کو تباہ کرنے کو تیار ہیں، لیکن مجھے عوام پر اعتماد ہے کیونکہ عوام کو شعور ہے’۔شہباز شریف کو اگلا وزیراعظم بنانے کے اعلان کو بھی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے عمران خان نے کہا، ‘موروثی سیاست یہ ہوتی ہے کہ نواز شریف گیا تو شہباز شریف آجائے’۔

واضح رہے کہ چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے گذشتہ روز سماجی رابطے کی سائٹ ٹوئٹر پر کہا تھا کہ وہ آج پریس کانفرنس میں بتائیں گے کہ کس طرح شریف خاندان نے دولت لوٹی اور بیرون ملک منتقل کی۔

نواز شریف عدلیہ کی بہتری نہیں کرپشن بچانے کیلئے تحریک چلانا چاہتے ہیں،عمران خان

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے کہ نواز شریف کی نااہلی اقامہ پر نہیں پانامہ پر ہونی چاہئے تھی، نواز کیخلاف بہت چیزیں سامنے آئیں نجانے ججز نے اقامہ پر ہی کیوں نااہل کیا، قطری خط سے بڑا فراڈ کیا ہوسکتا تھا، عدالت اس جھوٹ پر گھر بھیج دیتی، حدیبیہ کیس میں نئے شواہد آئے ہیں یہ کیس کھلے گا، نجی ٹی وی سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ نواز شریف نے ساری عمر عوام کو بیوقوف بنایا، انہیں جعلسازی اور لوگوں کو بیوقوف بنانے پر سزا ملنی چاہئے، میرے کیس کی جس باریک بینی سے چھان بین کی گئی اس طرح اسمبلی ارکان کی چھان بین ہو تو95 فیصد فارغ ہوجائیں گے، شکر کرتا ہوں کہ افتخار چودھری میرا کیس سننے والے نہیں تھے ورنہ مجھے فارغ کردیتے، نواز شریف عدلیہ کی بہتری نہیں چاہتے صرف اپنی کرپشن بچانے کیلئے تحریک کا شوشہ چھوڑا ہے، نواز شریف پر عدلیہ نے بڑا نرم ہاتھ رکھا کسی اور ملک میں ہوتے تو جیل میں ہوتے، اپنی چوری چھپانے کیلئے اداروں کو تباہ کررہے ہیں، چیئرمین تحریک انصاف نے کہا کہ عدالت کو چاہئے تھا کہ جہانگیر ترین کو ڈی سیٹ کرکے الیکشن لڑنے دیا جاتا، ترین اور نواز کے کیسز کا کسی طور موازنہ نہیں بنتا۔ انتظار ہے کہ اپنی وفاقی صوبائی حکومت ہوتے نواز شریف کب عدلیہ مخالف تحریک چلاتے ہیں، چیلنج کرتا ہوں کہ نواز شریف تحریک نہیں چلاسکتے، کسان مزدور سمیت ہر طبقہ ان سے تنگ ہے، اگر ان سے ختم نبوت ترمیم بارے سوال کرینگے، تحریک چلانا نواز شریف کو بڑا مہنگا پڑے گا۔ جہانگیر ترین نے پارٹی عہدہ چھوڑ دیا ہے ان سے کہا تھا کہ نظر ثانی فیصلہ تک استعفیٰ نہ دیں، جہانگیر ترین کی پارٹی کیلئے بہت خدمات ہیں جو بھلائی نہیں جاسکتی۔ بڑے بڑے دعوے کرکے اقتدار میں آنے والے نواز شریف نے ملکی معیشت کے ساتھ کیا کیا، سب کھل کر سامنے آگیا ہے، انہوں نے ملک کو قرض کی دلدل میں پھنسا دیا ہے، حدیبیہ کیس اوپن اینڈ شٹ کیس ہے، نیب نے اسے غلط طریقے سے پیش کیا، کیس میں نئے شواہد آئیں تو دوبارہ کھولنا پڑتا ہے، یہ کیس بھی کھلے گا کیونکہ یہ سنا ہی نہیں گیا، صرف ٹیکنیکل گراو¿نڈ پر فارغ کیا گیا ہے، ملک کو قرض کی گہری دلدل میں پھنسانے والے اسحاق ڈار کی برطانیہ میں بستر پر لیٹے مریض بننے کی پرفارمنس آسکر ایوارڈ وننگ تھی، نواز شریف اور اس کے ساتھیوں نے عدلیہ پر حملے کئے ان کیخلاف توہین عدالت کے تحت کارروائی ہونا چاہئے تھی، ورنہ یہ مجرم ایسا ہی کرے گا، شریف خاندان جسٹس قیوم جیسے ججز کا عادی تھا، پہلی بار ان کا واسطہ اصل عدالت سے پڑا ہے، نواز شریف دعویٰ کرتے ہیں کہ عوام ان کے ساتھ ہیں تو الیکشن کی جانب کیوں نہیں جاتے، ملک جس پوزیشن میں ہے جلدی الیکشن کے علاوہ کوئی آپشن نہیں ہے، جمائما نے کیس میں میرا بڑا ساتھ دیا ان کی جتنی تعریف کروں کم ہے۔

”منشیات فروش ہار گیا “عمران خان کا اشارہ کس کی جانب

ٹنڈو محمد خان‘ کراچی (نمائند گان ) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ اللہ کاشکرگزارہوں، سپریم کورٹ کا فیصلہ تسلیم کرتے ہیں، ایک سال کی تلاشی کے بعد اپنے حق میں فیصلہ آنے پر خوشی ہوئی ہے، پاکستان کی سب سے بڑی عدالت نے مجھے تلاشی کے بعد بری کیا جبکہ حدیبیہ کیس میں نواز شریف کو بچانے پر نیب کی سخت مذمت کرتا ہوں۔ جہانگیر ترین کو نااہل قرار دینے پر بہت افسوس ہوا،جہانگیر ترین سب سے زیادہ ٹیکس دینے والے بزنس مین ہیں۔ سپریم کورٹ سے اپنے حق میں فیصلہ آنے کے بعد کراچی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ سپریم کورٹ میں سب سے زیادہ تلاشی میری ہوئی ہے اور عدالتی فیصلے پر اللہ کا شکر ادا کرتا ہوں۔ میرا موازنہ منی لانڈرنگ کے بادشاہ کے ساتھ کیا جا رہا ہے ۔ عمران خان نے کہا کہ سپریم کورٹ میں منشیات فروش کا دائر کردہ کیس ایک سال تک چلا۔ پوچھتا ہوں نواز شریف کو کیس کے لئے کوئی اور شخص نہ ملا۔ نواز شریف کو کیس کرنے کے لئے منشیات فروش کے سوا کوئی نہیں ملا، ایک سال کی تلاشی کے بعد میرے حق میں فیصلہ آیا۔ میں نے اپنی ساری منی ٹریل عدالت میں دی اور 60 دستاویزات جمع کرائیں۔ اس موقع پر پی ٹی آئی چیئرمین نے چیلنج کیا کہ کسی بھی رکن پارلیمنٹ کی اس طرح تلاشی لی گئی تو اس سے کچھ نہ کچھ مل جائے گا۔ خوشی یہ ہے کہ ایسی تلاشی کے بعد میرا سب کچھ لوگوں کے سامنے آگیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ تکلیف یہ ہے کہ میرا ایسے شخص سے ایک سال تک موازنہ کیا گیا جس نے غریب قوم کا پیسہ چوری کیا۔ ن لیگ کے کرپٹ لوگ سپریم کورٹ کے باہر کھڑے ہوکر مجھے برا بھلا کہتے رہے۔عمران خان نے کہا کہ نواز شریف ملک کا سب سے بڑا منی لانڈرر ہے، حدیبیہ کیس میں نیب کی سخت مذمت کرتا ہوں، اس نے نواز شریف کو بچایا اور پوری مدد کی، نیب نے کیس صحیح طرح پیش نہیں کیا اور یہ فیصلہ میرٹ پر نہیں ہوا، پرانا چیئرمین قمر زمان چوہدری شریف مافیا سے ملا ہوا تھا، شریف خاندان بتا نہیں سکتا کہ ان کے پاس پیسہ کہاں سے آیا، ان کے پاس ہر چیز کا جواب قطری خط ہے، سب کو پتا ہے کہ خط فراڈ تھا۔انہوں نے کہا کہ ہیلی کاپٹر یا جہاز کے لئے پارٹی پیسے دیتی ہے، ہم کسی کے احسان مند نہیں۔ جہانگیر ترین کے نااہلی کے فیصلے کے حوالے سے سربراہ تحریک انصاف نے کہا جہانگیرترین کے خلاف فیصلہ آنے پرافسوس ہواہے۔ جہانگیر ترین کو نااہل قرار دینے پر بہت افسوس ہوا، جہانگیرترین سب سے زیادہ ٹیکس دینے والے بزنس مین ہیں۔ انہوں نے کہاکہ سپریم کورٹ کافیصلہ تسلیم کرتے ہیں، سپریم کورٹ نے فیصلہ تکنیکی بنیادپرکیانظرثانی اپیل کرینگے۔ جہانگیرترین کا موازنہ ان ڈاﺅکوں سے نہ کیا جائے۔عمران خان نے کہا کہ جہانگیر پر پورا اعتماد ہے، انہیں تکنیکی بنیادوں پر نااہل کیا گیا اور انہوں نے کوئی غلط کام نہیں کیا، فیصلے پر افسوس ہوا جس کے خلاف نظرثانی اپیل کریں گے۔چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ خوشی ہے پاکستان کی خدمت کرنے کاموقع ملا ہے، خوشی ہے میں نے تلاشی دی اور سرخرو ہوا، لوگ مجھ پر اعتماد کرتے ہیں اسپتال کیلئے پیسے دیتے ہیں، خوشی ہے اب میں کھل کر لوگوں کے سامنے آگیا ہوں۔چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے کہ آئندہ انتخابات مین ہر چوروں اور لیٹروں کو شکست دیں گے، شہباز شریف اپنے امپائر بھی کھڑیں کر دیں پھر بھی جیت ہماری ہو گی، ہم سندھ میں حکومت قائم کریں گے، سندھ میں تعلیم، صحت اور پولیس کا نظام ٹھیک کریں گے۔ سندھ میں سب سے زیادہ کرپشن ہو رہی ہے، سندھ باقی پاکستان سے پیچھے رہ گیا، ایک قوم تب پیچھے رہتی ہے جب وہ تعلیم میں پیچھے چلی جاتی ہے، تعلیم کے میدان میں پنجاب سب سے اگے تھا، اب تعلیم کے میدان میں خیبرپختونخواہ آگے نکل گیا ہے، سندھ میں پی پی کی حکومت نے تعلیم پر توجہ نہیں دی، حکمرانوں کے بچے انگلش میڈیم میں پڑھتے ہیں، تعلیم کا دہرا معیار ہے، تعلیم کے میدان میں پیچھے رہنے والی قوم پیچھے رہ جاتی ہے۔ ٹنڈو محمد خان میں پارٹی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ سندھ میں ہماری حکومت آئے گی تو تعلیم کا نظام ٹھیک کریں گے، ایک دن آئے گا اس ملک کے وزیراعظم کے بچے سرکاری سکولوں میں پڑھیں گے، سندھ کی پولیس کا نظام سب سے خراب ہے، سندھ کے لوگوں کو صحت اور پولیس کا نظام سب سے زیادہ تنگ کرتے ہے، لوگوں پر جھوٹے کیسز بنا کر تنگ کیا جاتا ہے، کے پی کے پولیس انٹرنیشنل معیار کی پولیس ہے، صوبے میں بہترین پولیس کی وجہ سے دہشتگردی ختم ہوگی، سندھ میں لوگ پولیس سے ڈرتے ہیں، آئی جی سندھ کی رپورٹ کے مطابق14ہزار پولیس اہلکاروں پر کرپشن کے کیسز ہےں، جب پولیس کو اپنے مقاصد کےلئے استعمال کیا جاتا ہے۔

عمران خان نا اہلی کیس سے بچ نکلے ،بڑی عدالت میں بڑا فیصلہ سُنا دیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک)عمران خان جہانگیر ترین نااہلی کیس بارے سپریم کورٹ نے اپنا تاریخی فیصلہ سنا دیا ہے ۔جسٹس ثاقب نثار نے بینچ کی سر براہی کی اور فیصلہ سنا دیا ہے ،چیف جسٹس نے کہا فیصلہ میں تاخیر اس وجہ سے بھی ہو ئی کہ ایک صفحہ میں غلطی کیوجہ سے فیصلہ میں تاخیر ہوئی ۔ایک صفحہ پر غلطی کیوجہ سے 250صفحات پڑھنا پڑے ۔چیف جسٹس نے کہا تمام شواہد کا جائزہ لیا گیا ۔تحریک انصاف پر غیر ملکی فنڈنگ کا الزام لگا یا گیا ۔پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان نا اہلی سے بچ گئے جبکہ الیکشن کمیشن اکاﺅنٹس کی غیر جانبدارانہ تحقیقات کرے ۔