تازہ تر ین

دیا میر بھاشا مشکل کام،کالا باغ ڈیم آسان راستہ:امتنان شاہد

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) ایڈیٹر خبریں گروپ آف نیوز پیپرز اور سی ای او چینل ۵ امتنان شاہد نے کہا ہے کہ کالا باغ ڈیم بہت ضروری ٹاسک ہے۔ سب سے اہم بات یہ ہے کہ پاکستان انڈس کمیشن کو کبھی حکومت پاکستان کی طرف سے سنجیدگی سے نہیں لیا گیا۔ بدقسمتی سے گزشتہ 20 سال کو دیکھیں تو وارسک ڈیم 1960ئ، منگلا ڈیم 1962ئ، راول ڈیم 1962، سنگلی ڈیم 1962، حب ڈیم 1963ئ، تربیلا 1968ءاور خان پور ڈیم 1968ءمیں بنا۔ یہ ڈیم اس دور میں بنے ہوئے ہیں جو جنرل ایوب کا دور تھا۔ آج بھی چیف جسٹس صاحب نے ہماری نسلوں پر بہت بڑا احسان کیا ہے۔ ایوب خان کے نظریے سے اختلاف کر سکتے ہیں لیکن اس وقت ہم اور ہمارے بچے زندہ ہیں تو اس آدمی کی مہربانی ہے۔ اس وقت بھی کوئی مفاہمت نہیں تھی۔ اس وقت بھی کسی سیاسی جماعت نے اٹھ کر نہیں کہا تھا کہ آ? سارے ملک کر بنائیں۔ یہ فرد واحد کا فیصلہ تھا۔ یہ فیکٹ ہے کہ بدقسمتی سے ہماری سیاسی جماعتوں میں سے کسی میں بھی اتنی دور اندیشی نہیں ہے، قوم کی فکر نہیں ہے کہ 10 سال بعد اس ملک میں پانی نہ ہوا تو آپ کا کھانا کہاں سے آئے گا۔ نجی ٹی وی پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے امتنان شاہد نے کہا کہ انڈیا میں انڈسس واٹر کمیشن کے نام پر ایک کمیشن بنایا گیا۔ جس کی صوابدید پر اڑھائی بلین بھارتی روپے ہیں جبکہ پاکستان کی طرف کمیشن پر 5 بلین ہیں۔ جو دو نیشن فنڈ ہے۔ جس میں سے جو پیسے نکلتے ہیں وہ واپس آ جاتے ہیں۔ سنا یہ گیا ہے کہ پاکستان میں جتنے بھی اہم بیورو کریٹس وزراءاور انڈسس واٹر ٹریٹی کے سرکردہ ماہرین کو بھی اس میں سے پیسے جاتے ہیں اور انڈیا انٹرنیشنل کورٹ آف جسٹس میں کلیم کرتا ہے کہ پاکستان کو تو پانی کی ضرورت ہی نہیں ہے۔ اور ہم بولتے نہیں ہیں۔ عمران خان کی شخصیت کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ میں نے جب صحافت میں قدم رکھا تو 1996ءمیں احتساب موومنٹ کے نام سے ایک تحریک شروع کی۔ میں نے گلوکار سلمان احمد اور عمران خان بھی اس میں شامل تھے۔ ہم نے مل کر خبریں کے پلیٹ فارم سے 6 سے 8 مہینے لگائے اور جنون گروپ کے کنسرٹ کروائے جب جنون پی ٹی وی پر بین تھا۔ ہم خود رات کو جا جا کر مال روڈ پر بینر لگاتے تھے۔ میں عمران خان اور تحریک انصاف کا بیٹ رپورٹر تھا۔ سکاچ کار پر دفتر تھا۔ میں نے بیٹ رپورٹنگ سے صحافت کا آغاز کیا یہ 1996ئ کی بات ہے۔ مجھے انہوں نے کہا کہ ذرا عمران خان نئے نئے کپتان بن کر آئے ہیں اور نیا ورلڈ کپ جیتا ہے۔ احتساب کا بین ویڈیو اسی ٹائم پر بنا تھا۔ انہوں نے کہا کہ لاکھ آدمی سے اختلاف کریں، سیاست میں، عمران خان صاحب کرپٹ نہیں ہیں اور ان کے اوپر الزام لگانے والے آہستہ آہستہ خود کرپٹ ہونے جا رہے ہیں اور کرپٹ نکلتے جا رہے ہیں اور ثابت ہوتا جا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج میں بیان پڑھ رہا تھا سنیٹر زاہد خان کہتے ہیں کہ پنجاب میں جو وزیراعلیٰ نامزد کیے گئے ہیں وہ جانبدار ہیں، پنجاب میں اے این پی، وہ جماعتیں اپنی ناک پھنساتی ہیں جن کی ایک سیٹ نہیں ہے۔ ان کا یونین کونسلر بھی نہیں ہے اور اس طرح کالا باغ ڈیم کے مسئلے کو بھی سیاست کی نظر کیا ہوا ہے۔ صرف کچھ لوگوں نے۔ اس کا باقاعدہ انڈیا نے ایک فنڈز رکھا ہوا ہے جو کہ اڑھائی بلین بھارتی روپے ہیں۔ یہ فنڈ مختلف روٹیشنز پر ہے۔ اس میں سے جتنے پیسے نکال کر وہ استعمال کرتے ہیں اس میں دوبارہ ڈل جاتے ہیں۔ لہٰذا یہ عوام کے موقف کو مولڈ کرنے کا، ہم سندھ سے 3 سٹیشنز سے اخبار نکالتے ہیں، ہم نے، پرویز مشرف نے ایک دفعہ ایک موومنٹ شروع کی تھی جب وہ صدر تھے اور کالاباغ کے ہم نے ہمارے سندھی کے اخبار میں اشتہار چھاپ دئیے، اس پر کسی نے جوابی کارروائی نہیں کی۔ ایک سیاسی جماعت تھی جس نے جوابی کارروائی کی۔ انہوں نے ہمارے دفتر پر کریکر بم پھینکے۔ ہمارے پشاور کے آفس پر حملہ ہوا، سکھر کے دفتر پر حملہ ہوا لیکن ایک جماعت تھی۔ پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے گلوکار سلمان احمد نے کہا کہ ریحام ان سے 2014 میں ملیں اور اپنا تعارف کروایا تو وہ پاکستان کی نمبرون اینکر پرسن تھیں اور میری فین تھیں۔ مگر ان کی کتاب کوئی ماں بہن نہیں پڑھ سکتی۔ آج عمران خان کی سابقہ بیوی جمائما کا مجھے فون آیا اور انہوں نے کہا کہ میرے 16 سالہ بیٹے کے خلاف ریحام کی کتاب میں مواد شائع ہوا تو میں انہیں کورٹ میں لے جا?ں گی۔ سلمان احمد نے انکشاف کیا کہ ریحام خان ایس کے ایم ٹی، عمران خان فا?نڈیشن اور نمل کے لئے آنیوالی زکوٰة فنڈاپنے اکاﺅنٹ میں ڈالنا چاہ رہی تھیں اور عمران خان نے انہیں پکڑ لیا۔ ایسی عورت کی کیا حیثیت ہے۔ ریحام یہودی لابی کی ماں ہے۔ دشمن عناصر کے ساتھ مل کر کتاب لکھنے پر میں ان کا سب سے بڑا دشمن ہوں۔ پروگرام میں شریک مہمان تجزیہ نگار چودھری غلام حسین نے کہا کہ قوم کو نظر آ گیا ہے کہ پانی ختم ہو گیا تو ہم ختم ہیں۔ ن لیگ اور پیپلز پارٹی نے پاکستان کو بنجر بنانے میں لگے ہیں کیونکہ یہ انکا وطن نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ کالا باغ ڈیم کی مخالفت کرنے والے اسفند یار ولی نے ا مریکہ سے بلین ڈالرز لیے اور ان کے دادا بھارت سے پوٹلیاں لیتے رہے۔ انہوں نے کہا کہ شریفوں سے جان چھوٹ رہی ہے۔ ان کا یہ حال ہے کہ شہباز شریف کہتے ہیں جو بھی ہو جائے پنجاب اور اسلام آباد کی 150 سیٹوں میں سے 70’65 ہم لینگے۔ مگر ان کی سیٹیں 40,35 ہونگی۔ ان کا کہنا تھا کہ عمران خان کا امیج خراب کرنے کی بین الاقوامی سازش ہو رہی ہے۔ ایک خبر کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ آئی بی کا باپ بھی نواز شریف کو الیکشن نہیں جتوا سکتا۔



خاص خبریں


Pemra.jpg

سائنس اور ٹیکنالوجی



تازہ ترین ویڈیوز



HEAD OFFICE
Khabrain Tower
12 Lawrance Road Lahore
Pakistan

Channel Five Pakistan© 2015.
© 2015, CHANNEL FIVE PAKISTAN | All rights of the publication are reserved by channelfivepakistan.tv