All posts by sultan malik

وزیراعظم سمیت کس سیاسی لیڈر نےکتنا ٹیکس دیا ؟ ایف بی آرکی ٹیکس ڈائریکٹری جاری

اسلام آباد(ویب ڈیسک)وزیراعظم عمران خان سمیت کس سیاسی لیڈر نے کتنا ٹیکس دیا؟ فیڈرل بورڈ آف ریونیو(ایف بی آر)نے ارکان پارلیمنٹ کی ٹیکس ڈائریکٹری جاری کردی ہے۔ایف بی آر کی جانب سے جاری ٹیکس ڈائریکٹری سال 2019 کے ٹیکس گوشواروں پر مشتمل ہے، وزیرخزانہ شوکت ترین نے ارکان پارلیمنٹیرینز کی ٹیکس ڈائریکٹری کا اجرا ءکر دیا ،ٹیکس ڈائریکٹری سال 2019 کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی آمدنی 4 کروڑ 35 لاکھ روپے تھی اور انہوں نے سال 2019 میں 98 لاکھ 54 ہزار 959 روپے ٹیکس دیا۔مسلم لیگ ن کے صدر اور قائد حزب اختلاف شہباز شریف کی آمدنی 5 کروڑ 63 لاکھ روپے تھی اور انہوں نے 82 لاکھ 42 ہزار روپے ٹیکس دیا۔پیپلز پارٹی کے صدر آصف علی زرداری کی آمدنی 28 کروڑ 26 لاکھ روپے تھی اور انہوں نے 22 لاکھ 18 ہزار روپے ٹیکس دیا۔ان کے علاوہ چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری کی سال 2019 کی آمدنی 3 کروڑ 81 لاکھ روپے تھی اور بلاول نے سال 2019 میں 5 لاکھ 35 ہزار روپے ٹیکس دیا۔ وفاقی وزیر برائے مواصلات مراد سعید نے 86 ہزار 606 روپے انکم ٹیکس ادا کیا، وفاقی وزیر حماد اظہر نے 29 ہزار 25 روپے انکم ٹیکس ادا کیا۔ڈائریکٹری کے مطابق وزیر داخلہ شیخ رشید نے 5 لاکھ 57 ہزار 450 روپے، پی ٹی آئی نور عالم خان نے 82 ہزار 311 روپے، مسلم لیگ ن کے خواجہ سعد رفیق نے 2 لاکھ 69 ہزار 414 روپے انکم ٹیکس ادا کیا۔دیگر اراکین پارلیمنٹ میں مسلم لیگ ن کے خواجہ آصف نے 2 لاکھ 30 ہزار 386 روپے، وزیر غلام سرور خان نے 12 لاکھ 11 ہزار 661 روپے، وزیراعلی خیبر پختونخوا محمود خان نے 66 ہزار 258 روپے، وزیراعلی سندھ مراد علی شاہ نے 10 لاکھ 99 ہزار 758 روپے انکم ٹیکس ادا کیا۔2019 کے دوران وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار نے صرف 2 ہزار روپے انکم ٹیکس ادا کیا جبکہ مسلم لیگ ن کے خرم دستگیر نے 91 ہزار روپے،، وفاقی وزیر اسد عمر نے 42 لاکھ 72 ہزار، سپیکر اسد قیصر نے 5 لاکھ 55 ہزار انکم ٹیکس دیا۔پارلیمنٹرین کی جاری کردہ ٹیکس ڈائریکٹری کے مطابق وزیر خزانہ شوکت ترین نے 2 کروڑ 66 لاکھ روپے، پیپلزپارٹی کی شیریں رحمان نے 9 لاکھ 40 ہزار روپے، سینیٹر مشاہد حسین سید نے 76 ہزار روپے، سینیٹر فاروق ایچ نائیک نے 49 لاکھ روپے، سینیٹر فیصل جاوید نے 66 ہزار روپے، وفاقی وزیر ریلوے اعظم خان سواتی 7 لاکھ 84 ہزار روپے انکم ٹیکس جمع کرایا۔چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی نے سال 2019 میں 13 لاکھ 99 ہزار روپے، سینیٹر فیصل واوڈا نے 11 لاکھ 62 ہزار روپے، سینیٹر طلحہ محمود نے 3 کروڑ 22 لاکھ روپے انکم ٹیکس ادا کیا۔ڈپٹی چیئرمین سینیٹ مرزا محمد آفریدی نے 40 ہزار 913 روپے، وزیر قانون فروغ نسیم نے 42 لاکھ 85 ہزار 201 روپے، سینیٹر رضا ربانی نے 15 لاکھ 56 ہزار روپے، وفاقی وزیر مونس الہی نے 65 لاکھ 34 ہزار 251 روپے، سپیکر پنجاب اسمبلی پرویز الہی نے 9 لاکھ 32 ہزار 835 روپے، وزیر دفاع پرویز خٹک نے 12 لاکھ 57 ہزار 461 روپے، وفاقی وزیر نور الحق قادری نے 62 ہزار 250 روپے، شہریار آفریدی نے 53 ہزار 876 روپے، وزیر مملکت فرخ حبیب نے 4 لاکھ 5 ہزار 477 روپے انکم ٹیکس ادا کیا۔وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی شبلی فراز نے 8 لاکھ 85 ہزار روپے، سینیٹر مولانا عبدالغفور حیدری نے 89 ہزار 479 روپے، سینیٹر ذیشان نے 1 ہزار روپے، شیریں مزاری نے 3 لاکھ 71 ہزار 33 روپے، وزیراعلی بلوچستان قدوس بزنجو نے 10لاکھ 61 ہزار 777 روپے ، جام کمال نے ایک کروڑ 17 لاکھ 50 ہزار 799 روپے، شاہ محمودقریشی نے 8 لاکھ 51 ہزار 955 روپے، شاہدخاقان عباسی نے 48 لاکھ 71 ہزار 277 روپے، عامر ڈوگر نے 22 لاکھ 98 ہزار 790 روپے، وفاقی وزیر خسرو بختیار نے 1 لاکھ 58 ہزار 100 روپے، احسن اقبال نے 55 ہزار 656 روپے، اعظم نذیر تارڑ نے 25 لاکھ 40 ہزار126 روپے، سینیٹر احمد خان نے 23 لاکھ 88 ہزار 362 روپے، یوسف رضا گیلانی نے کوئی انکم ٹیکس ادا نہیں کیا۔ پاکستان تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی نجیب ہارون نے 14 کروڑ 7 لاکھ روپے سے زائد ٹیکس ادا کیا ،ملیکہ علی بخاری نے 38 ہزار 343 روپے ، ترجمان مسلم لیگ ن مریم اورنگزیب نے 39 ہزار 761 روپے انکم ٹیکس ادا کیا،اس سے قبل وزیرخزانہ شوکت ترین نے ارکان پارلیمنٹیرینز کی ٹیکس ڈائریکٹری کا اجرا کر دیا،اس موقع پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیرخزانہ شوکت ترین کا کہنا تھا کہ ٹیکس کلچر کو پروان چڑھانے کیلئے شروعات پارلیمنٹیرینز سے ہونی چاہیے، ارکان پارلیمنٹ ٹیکس کی ادائیگی میں لوگوں کیلئے مثال بنیں۔ وزیرخزانہ شوکت ترین کا کہنا تھا کہ معاشرے کی ترقی میں ٹیکس کااہم کردارہے، جب تک ٹیکس ریونیواکٹھا نہیں ہوتا ملک ترقی نہیں کرسکتا، وزیرخزانہ کا کہنا تھا کہ ٹیکس سسٹم میں شفافیت اور آسانی کیلئے اقدامات کر رہے ہیں، یہاں جس کی جتنی طاقت ہے وہ ٹیکس چھپاتاہے، ہم کرنٹ اخراجات بھی اپنے ریونیو سے پورا نہیں کر پا رہے، شناختی کارڈکے ذریعے پتہ لگائیں گے کہ کس کی کتنی انکم ہے، کسی کوہراساں نہیں کریں گے لیکن ٹیکس ادا کرنا ہوگا۔شوکت ترین نے کہا کہ انکم ٹیکس اور جی ایس ٹی کے علاوہ کوئی ٹیکس نہیں ہونا چاہیے، 22 کروڑ کی آبادی میں سے صرف 30 لاکھ افراد ٹیکس دیتے ہیں، محصولات میں اضافے کیلئے ٹیکس نیٹ کو بڑھانے کی ضرورت ہے۔

اٹارنی جنرل کی لاہور ہائیکورٹ آمد، شہبازشریف کے حلف نامے کے تحت نوازشریف کی اپیل پر گفتگو

اٹارنی جنرل بیرسٹر خالد جاوید نے لاہور ہائیکورٹ میں وفاقی حکومت کے لاء افسران سے ملاقات کی۔

ذرائع کے مطابق ملاقات میں شہبازشریف کے حلف نامے کے تحت نوازشریف کی اپیل پر گفتگو ہوئی جبکہ وفاق کے زیرسماعت مقدمات کے متعلق بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔

ذرائع نے بتایا کہ اٹارنی جنرل نے لاء افسران کو ہدایت کی کہ کیسزکی بھرپورتیاری کرکے عدالتوں میں پیش ہوں اور زیرالتوا کیسز جلد نمٹانے کی کوشش کریں۔

خیال رہے کہ گزشتہ روز وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے سابق وزیراعظم نواز شریف کی وطن واپسی کے معاملے پر قائد حزب اختلاف و مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف کے خلاف کارروائی کرنے کا اعلان کیا تھا۔

سابق وزیراعظم نواز شریف کی وطن واپسی سے متعلق پوچھے گئے سوال پر فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ نواز شریف کی واپسی کیلئے وزیراعظم نے اٹارنی جنرل کوہدایت جاری کی ہے۔

دنیا میں ’فلورونا‘ کا پہلا کیس سامنے آگیا، یہ کیا ہے اور کتنا خطرناک ہے؟

کورونا کی بڑھتی ہوئی تباہی کے درمیان دنیا میں پہلی بار ایک ساتھ انسانی جسم پر حملہ کرنے والے کورونا اور فلو وائرس کا کیس سامنے آیا ہے۔

اس کورونا اور انفلوئنزا کے دوہرے انفیکشن کو ’فلورونا‘ کہا جا رہا ہے کیونکہ اس نئے انفیکشن میں مبتلا مریض میں کورونا اور انفلوئنزا دونوں وائرس پائے گئے ہیں۔

فلورونا کیا ہے؟

آسان الفاظ میں یہ ایک ہی مریض میں کورونا اور فلو یعنی زکام کے دوہرے انفیکشن کا معاملہ ہے۔

کورونا اور فلو کے اس دوہرے انفیکشن کو ’فلورونا‘ کہا جا رہا ہے یعنی بیک وقت فلو + کورونا کا دوہرا انفیکشن ‘فلورونا’ ہے۔

دنیا کا پہلا فلورونا کیس کہاں پایا گیا؟

دنیا کا پہلا فلورونا کیس حال ہی میں اسرائیل میں سامنے آیا ہے۔ عرب نیوز کے مطابق فلورونا کا پہلا کیس ایک حاملہ خاتون میں پایا گیا ہے جسے رابن میڈیکل سینٹر میں بچے کو جنم دینے کے لیے داخل کیا گیا تھا۔

اسرائیل کے اخبار Yedioth Ahronoth کے مطابق جس خاتون میں فلورونا کا کیس سامنے آیا اسے ویکسین نہیں لگائی گئی تھی۔

کیا نئی قسم فلورونا ہے؟

سب سے پہلے یہ جان لیں کہ فلورونا کورونا کا کوئی نیا ویرینٹ نہیں ہے۔ یہ ایک ہی وقت میں فلو اور کورونا سے ہونے والا دوہرا انفیکشن ہے۔

اسرائیلی ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ گزشتہ چند ہفتوں میں اسرائیل میں انفلوئنزا یا فلو (زکام) کے کیسز میں تیزی سے اضافہ ہوا ہے اور یہی وجہ ہے کہ یہ تحقیق فلورونا پر کی جا رہی ہے۔

قاہرہ یونیورسٹی اسپتال کی ایک ڈاکٹر نہلہ عبدالوہاب نے اسرائیلی میڈیا کو بتایا کہ ‘فلورونا’ مدافعتی نظام کی بڑی خرابی کی نشاندہی کر سکتا ہے کیونکہ اس میں ایک ہی وقت میں دو وائرس انسانی جسم میں داخل ہوتے ہیں۔

فلورونا خطرناک کیوں ہو سکتا ہے؟

ماہرین کے مطابق کورونا اور فلو دونوں کے دوہرے حملے سے سنگین بیماری کا خطرہ زیادہ ہے کیونکہ یہ تیزی سے پھیل سکتا ہے۔

دونوں وائرس ایک ساتھ مل کر جسم پر تباہی مچا سکتے ہیں اور بہت سی سنگین بیماریوں کا سبب بھی بن سکتے ہیں یہی وجہ ہے کہ فلورونا ہونا خطرناک ہو سکتا ہے۔

فلورونا کی وجہ سے مریض کو نمونیا، سانس لینے میں دشواری، اعضاء کا خراب ہونا، ہارٹ اٹیک، دل یا دماغ میں سوجن، فالج وغیرہ جیسی سنگین بیماریاں ہو سکتی ہیں۔

فلورونا کیسے پھیلتا ہے؟

ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن (ڈبلیو ایچ او) کے مطابق ‘ایک ہی وقت میں فلو اور کورونا دونوں بیماریاں لاحق ہوسکتی ہیں۔’

کورونا اور فلو دونوں وائرس ان لوگوں میں پھیلتے ہیں جو قریبی رابطے میں آتے ہیں (چھ فٹ یا دو میٹر کے اندر)۔ یہ دونوں وائرس سانس کی بوندوں یا ایروسول کے ذریعے پھیلتے ہیں جو بات کرنے، چھینکنے یا کھانسنے سے خارج ہوتے ہیں۔ سانس لینے پر یہ بوندیں منہ یا ناک کے ذریعے جسم کے اندر پہنچ سکتی ہیں۔

فلورونا کی عام علامات کیا ہیں اور تحقیقات کیسے کی جاتی ہیں؟

فلو (زکام) کی علامات عام طور پر تین سے چار دن میں ظاہر ہوتی ہیں جب کہ کورونا کی علامات ظاہر ہونے میں 2 سے 14 دن لگتے ہیں۔

فلو اور کورونا دونوں کی عام علامات تقریباً ایک جیسی ہیں کیونکہ دونوں میں کھانسی، نزلہ، بخار اور ناک بہنا جیسی علامات ہیں۔ یعنی کھانسی، زکام، بخار فلورونا کی ابتدائی عام علامات میں سے ہیں۔

اس کے ساتھ ساتھ فلورونا کی سنگین علامات میں نمونیا، سانس لینے میں زیادہ دشواری، دل کے پٹھوں میں سوجن، فالج، ہارٹ اٹیک کا خطرہ وغیرہ شامل ہیں۔

ان دونوں وائرس میں فرق مریض کے نمونے کی جانچ کے بعد ہی معلوم ہوتا ہے۔

فلو کی جانچ کے لیے پی سی آر ٹیسٹ کیا جاتا ہے جہاں وائرس کے آر این اے کی جانچ کی جاتی ہے۔ فلو اور کورونا کی جانچ کے لیے الگ الگ پی سی آر ٹیسٹ کیے جاتے ہیں۔

کورونا کی نئی قسم اومی کرون کی وجہ سے دنیا بھر میں کورونا کے کیسز آئے روز نئے ریکارڈ بنا رہے ہیں۔ امریکا، یورپ کے بعد اب پاکستان میں بھی کورونا کے کیسز تیزی سے بڑھ رہے ہیں۔

شہبازشریف کا نئے سال پر اہل وطن کیلئے دعا اور نیک تمناﺅں کا پیغام

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر اور قائد حزب اختلاف شہبازشریف نے نئے سال پر اہل وطن کے لئے دعا اور نیک تمناﺅں کا پیغام دیا ہے۔

اپنے بیان میں پاکستان شہبازشریف نے کہا کہ یا اللہ آنے والے تمام سال پاکستان اور دنیا کے لئے امن، سلامتی اور خیروبرکت کے سال ہوں، نوازشریف کی قیادت میں 2022 میں جناح کا پاکستان بنانے کی فیصلہ کن جدوجہد کا آغاز کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ قوم سے وعدہ کرتے ہیں کہ انشاءاللہ انہیں معاشی تباہی، مہنگائی اور بے روزگاری سے نجات دلائیں گے۔

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر کا کہنا تھا کہ 2022  میں قوم کو نئی امید، نیا حوصلہ اور نئی روشن منزل کی نوید دیں گے، بہتری کی طرف لے کر جائیں گے۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ اذیتوں، دکھوں اور مہنگائی کا ایک اور سال تمام ہوا، قوم کی زندگی میں ان تلخیوں کا غم ہے، نئے سال پر عہد کریں کہ ہم بابائے قوم کے اتحاد، تنظیم اور یقین محکم کے زریں اصولوں پر کاربند ہوں گے۔

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر نے کہا کہ ۔ نوجوان نسل کو پاکستان کی تعمیر، ترقی اور مضبوطی و خوشحالی کے لئے اپنا کردارادا کرنا ہوگا

شہبازشریف نے کہا کہ تعلیم، تربیت، ہنرمندی اور ذہانت کے حصول کے ساتھ محنت، دیانت اور اچھے اخلاق کی راہ اپنانا ہوگی۔

قائد حزب اختلاف شہبازشریف کا مزید کہنا تھا کہ دعا ہے کہ 2022 اور اس کے بعد آنے والے برسوں میں کشمیر، فلسطین اور مقبوضہ خطوں کے عوام کو آزادی کی نعمت میسرآئے۔

سال کی بہترین ڈلیوری کون سی، فیصلہ آپ خود کریں

سال 2021 شائقین  کرکٹ کے لیے 2020 کی نسبت سنسنی اور تفریح سے بھرپور رہا ہے۔

شائقین کرکٹ کو رواں برس ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ کا فائنل اور ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ سمیت کئی دلچسپ  اور سنسنی خیز مقابلے دیکھنے کو ملے۔

جہاں بالرز اور بلے بازوں نے بہترین کھیل پیش کیا وہیں فیلڈنگ کے شعبے میں بھی شاندار نظارے دیکھنے کو ملے۔

تاہم یہاں ہم آپ کو سال 2021 کی دو ایسی ڈلیوریز دکھانے جارہے ہیں  جو اپنی نوعیت کی منفرد ڈلیوریز ہیں جس کے بارے میں گیند باز خود کہتے ہیں کہ ایسی گیند ہوجانا کوئی معجزہ ہی ہے۔

پاکستان کے اسٹار فاسٹ بالر شاہین شاہ آفریدی اپنے کیریئر کے آغاز میں ہی کامیابی کی اس سیڑھی پر قدم رکھ چکے ہیں جہاں پورے کیریئر میں بھی پہنچنا بہت سے کھلاڑیوں کا خواب ہی رہ جاتا ہے۔

رواں برس شاہین شاہ آفریدی بین الاقوامی کرکٹ میں سب سے زیادہ وکٹیں حاصل کرنے والے کھلاڑی ہیں۔

ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کے گروپ میچ میں بھارت کے خلاف ان کی شاندار بالنگ کے تو خود بھارتی کھلاڑی بھی معترف ہوئے ہی لیکن لوکیش راہول کو بولڈ کرنے کا چرچا اب بھی کرکٹ ماہرین اور شائقین کی زبان زد عام ہے۔

شاہین شاہ آفریدی  کی جانب سے لوکیش راہول کو کی جانے والی گیند دنیا کے کسی بھی بلے باز کے لیے کھیلنا یقیناًناممکن تھی  یہی وجہ ہے کہ اسے 2021 کی بہترین ڈلیوری قراردیا جارہا ہے۔

دوسری جانب اپریل میں انگلش کاؤنٹی  کے میچ میں انگلینڈ کے لیگ اسپنر میٹ پارکنسن نے آسٹریلیا کے لیجنڈری لیگ اسپنر شین وارن کی 1993 کی ایشیز سیریز میں بال آف دی سینچری قرار دی گئی جیسی گیند کروا کر ماہرین کرکٹ سےخوب داد سمیٹی۔

میٹ پارکنسن نے وہ گیند مانچسٹر کے اسی اولڈ ٹریفورڈ گراؤنڈ میں کی جہاں 1993 میں شین وارن نے کی تھی۔

مسلم لیگ ن کے رکن پنجاب اسمبلی بلال یاسین حملے میں زخمی

پاکستان مسلم لیگ ن کے رکن پنجاب اسمبلی بلال یاسین موٹر سائیکل سوار ملزمان کی فائرنگ میں زخمی ہوگئے۔

پولیس کے مطابق موٹر سائیکل سوار دو نامعلوم افراد نے بلال یاسین پر فائرنگ کی جس کے نتیجے میں زخمی ہوگئے۔

بلال یاسین کو زخمی حالت میں میو اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔

پولیس کے مطابق بلال یاسین کو 2 گولیاں پیٹ اورایک ٹانگ پر لگی ہے اور ان کی تشویشناک ہے۔

مِنی بجٹ بل پر ووٹ ہو گا تو اپوزیشن کے تمام نمبرز پورے ہوں گے، نوید قمر

پیپلز پارٹی کے رہنما نوید قمر نے طنز کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت نے آکسیجن اور سانس لینے پر ٹیکس نہیں لگایا، کیا معلوم یہ آئندہ سانس لینے پر بھی ٹیکس لگا دیں۔

نوید قمر  نے کہا کہ جون میں مزید نزلہ گرنے والا ہے، عوام کو اس حد تک دیوار سے نہ لگائیں کہ ملک چلانا مشکل ہو جائے۔

انہوں نے کہا کہ کل حکومت نے ایکسپائرڈ آرڈیننسز کو توسیع دی، مِنی بجٹ بل پر  ووٹ ہو گا تو اپوزیشن کے تمام نمبرز  پورے ہوں گے۔

بنگلادیش: خواتین کیلئے ساحل کا حصہ مختص کرنے کا فیصلہ چند گھنٹوں میں واپس

بنگلادیش کی حکومت نے تنقید کے بعد ساحل پر خواتین کیلئے مختص کیا گیا علاقہ واپس لے لیا۔

رپورٹس کے مطابق گزشتہ روز بنگلادیشی حکومت نے کاکس بازار شہر میں 150 میٹر کا علاقہ خواتین اور بچوں کیلئے مختص کیا تھا جہاں مردوں کے جانے پر پابندی عائد کی گئی تھی۔

حکام کا کہنا ہے کہ کچھ خواتین کی درخواست پر ساحلی علاقے کو مختص کیا گیا تھا جبکہ درخواست میں خواتین کا کہنا تھاکہ ساحل پر جم غفیر میں خود کو محفوظ نہیں سمجھتیں لہٰذا علیحدہ سے علاقہ مختص کیا جائے۔

تاہم سوشل میڈیا پر تنقید کے بعد حکومت نے فیصلہ چند گھنٹوں میں ہی واپس لے لیا۔

خیال رہے کہ کاکس بازار دنیا کا طویل ترین قدرتی ساحل ہے جو 120 کلومیٹرکے علاقے پر پھیلا ہوا ہے۔

یہ بنگلادیش کا مقبول سیاحتی مقام ہے جہاں ہر وقت سیاحوں کا رش رہتا ہے۔

ضمنی مالیاتی بل پر بحث نہ ہوسکی، قومی اسمبلی کا اجلاس غیر معینہ مدت کیلئے ملتوی

قومی اسمبلی کا اجلاس کا غیر معینہ مدت کیلئے ملتوی کردیا گیا، اپوزیشن کی جانب سے کورم کی نشاندہی پر ڈپٹی اسپیکر  قاسم سوری نے اجلاس ملتوی کیا،اجلاس میں ضمنی مالیاتی بل 2021 پر بحث ہونا  تھی۔

قومی اسمبلی اجلاس میں اپوزیشن نے احتجاج و شرابہ کیا، کورم کورم کے نعرے لگائے جس کی وجہ سے اجلاس کی کارروائی نہ چل سکی۔

وقفہ سوالات کے آغاز میں ہی قومی اسمبلی کا اجلاس ملتوی کر دیا گیا۔ ڈپٹی اسپیکر قاسم سوری کی زیرصدارت قومی اسمبلی کے اجلاس میں رکن قومی اسمبلی عندلیب عباس کی والدہ کی وفات پر فاتحہ خوانی کی گئی۔

 وقفہ سوالات کے آغاز  میں ہی اپوزیشن ارکان نے احتجاج، شور شرابہ اور کورم کورم کے نعرے لگانا شروع کر دیے جس پر ڈپٹی اسپیکر نے کہا کہ وقفہ سوالات کے بعد ارکان کو بات کرنے کی اجازت دوں گا۔

کورم کورم کے نعروں کے باعث قومی اسمبلی کا اجلاس غیر معینہ مدت کے لیے ملتوی کردیا گیا۔

اومیکرون کا بگ بیش پر حملہ، پاکستانی کھلاڑیوں سمیت درجنوں متاثر

اومیکرون نے بگ بیش لیگ پر حملہ کردیا جس سے درجنوں افراد وائرس میں مبتلا ہوگئے اور پاکستانی کھلاڑیوں کی مشکلات میں اضافہ ہوگیا۔

غیر ملکی رپورٹس کے مطابق 2021 میں عالمی وبا کورونا کے باعث بہت سے کھیل متاثر ہوئے جن میں کرکٹ سرفہرست ہے ، کورونا کے باعث، پی ایس ایل اور آئی پی ایل سمیت مختلف لیگز متاثر ہوئی اور اس کے علاوہ باہمی سیریز میں بھی کورونا کے کیسز سامنے آئے۔

حال ہی میں ایشز سیریز کے دوران بھی کورونا کیسز سامنے آئے تھے ، ابتدا میں انگلینڈ ٹیم مینجمنٹ اور کوچنگ اسٹاف کے کچھ ارکان کورونا میں مبتلا ہوئے تھے اور اب آسٹریلین بلے باز ٹریوس ہیڈ کورونا کا شکار ہوکر چوتھے ٹیسٹ سے باہر ہوگئے ہیں۔

کورونا کے نئے ویرینٹ اومیکرون نے اب آسٹریلین کرکٹ لیگ بگ بیش پر حملہ کردیا ہے جس سے درجنوں افراد متاثر ہوئے ہیں ۔ مجموعی طور پر 19 لوگوں کی کورونا رپورٹس مثبت آئی ہے جن میں 11 کھلاڑی بھی شامل ہیں تاہم یہ واضح نہیں ہوسکا کہ ان کھلاڑیوں کا تعلق کن ممالک سے ہے۔

میلبرن اسٹارز کے 7 کھلاڑی اور 8 اسٹاف ممبرز کورونا وائرس کا شکار ہوئے جس میں پاکستانی کھلاڑی بھی شامل ہیں تاہم ٹیم مینجمنٹ کی جانب سے کورونا سے متاثر ہونے والے کھلاڑیوں کی فہرست جاری نہیں کی گئی البتہ تمام کھلاڑی قرنطینہ ہوگئے ہیں۔

قومی ٹیم کے فاسٹ بولر حارث رؤف کے علاوہ لاہور قلندرز کے دلبر حسین ، سید فریدون ، احمد دانیال بھی میلبرن اسٹارز کا حصہ ہیں۔

دوسری جانب سڈنی تھنڈر کے بھی 4 کھلاڑیوں کی کورونا وائرس کی رپورٹس مثبت آئی ہے اور تمام افراد کو قرنطینہ میں بھیج دیا گیا ہے۔

واضح رہے بگ بیش لیگ میں قومی ٹی ٹوئنٹی ٹیم کے نائب کپتان شاداب خان سمیت متعدد کھلاڑی حصہ لے رہے ہیں جن میں فخر زمان ، حارث رؤف ، دلبر حسین  ، محمد حسنین  ، احمد دانیال اور سید فریدون شامل ہیں۔

ڈپٹی مینیجنگ ڈائریکٹر واسا آپریشن کی سربراہی میں میٹنگ کا انعقاد

ڈپٹی مینیجنگ ڈائریکٹر واسا آپریشن محمد غفران کی سربراہی میں واسا کی میٹنگ کا انعقاد ہوا ہے۔

واسا کی منعقدہ میٹنگ میں ادارے کے ڈویلپمنٹ ورکس، ڈیسلٹنگ، ون لائن ون سٹریٹ، ڈیجیٹل کمپلینٹ سینٹر، گریٹنگ کی تنصیب کے علاوہ نئی و پرانی مشینری کی پراگرس کا جائزہ لیا گیا۔

میٹنگ میں یہ طے پایا کہ تمام ڈرین اور سیوریج لائنوں کی ڈیسلٹنگ کا آغاز 50 فیصد مشینری کے ساتھ جنوری سے کیا جائے گا جس کی روزانہ کی بنیاد پر مانیٹرنگ کی جائے گی۔

محمد غفران کا کہنا تھا کہ ون لائن ون اسٹریٹ کے تحت ایک گلی میں ایک پائپ لائن فعال ہو گی اور پرانی پائپ لائن کو لازمی ڈیڈ کرنا ہو گا۔

ڈپٹی مینیجنگ ڈائریکٹر واسا آپریشن محمد غفران نے شکایات کا بروقت ازالہ نہ کرنے والے افسران و عملہ پر میٹنگ میں سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ غفلت کے مرتکب افسران و عملہ کے خلاف ایکشن لیا جائے گا۔

ای سی سی اجلاس میں کئی اہم فیصلوں کی منظوری

ای سی سی اجلاس میں کئی اہم فیصلوں کی منظوری دے دی گئی۔

وفاقی وزیر خزانہ شوکت ترین کی زیر صدارت ای سی سی کا اجلاس منعقد ہوا جس میں وفاقی وزراء، معاونین خصوصی اور مشیروں سمیت دیگر اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔

اجلاس میں پی آئی اے کی ملکیت روزویلٹ ہوٹل نیویارک کے قرضے کی ادائیگی 31 دسمبر 2024ء تک بڑھا دی گئی جب کہ ہوٹل کے 142 ملین ڈالر کے قرضے اور سود کی ادائیگی 2 سال میں قسطوں میں کی جائے گی۔

ای سی سی نے 5 ضروری اشیاء پر جنوری کے دوران بھی سبسڈی جاری رکھنے کی منظوری دیدی جب کہ این ایچ اے کے 2022ء کیلئے بزنس پلان کی منظوری دیدی۔

اعلامیے کے مطابق سمبڑیال کھاریاں موٹروے کے منصوبے کیلئے 8 ارب کے اضافی فنڈز کی فراہمی کی منظوری دی گئی۔

زرمبادلہ بھجوانے کے مراعاتی پیکیج کے تحت ایکسچینج کمپنیوں کے نئے ماڈل کی منظوری دی گئی، فاطمہ فرٹیلائزر کے شیخوپورہ پلانٹ کیلئے گیس ریٹ کے تعین کی بھی منظوری دیدی گئی۔

اکتوبر 2021ء سے جنوری 2022ء کیلئے ریٹ 839 روپے فی ایم ایم بی ٹی یو ہوگی۔

این ای ایس سی کیلئے تین کروڑ ڈالر سے زائد کی 2 ساورن گارنٹیز دینے کی بھی منظوری دی گئی۔

نیا پاکستان ہاؤسنگ اتھارٹی کے کم لاگت گھروں کے منصوبے میں کمرشل بنکوں کی براہ راست مداخلت ختم کرنے کی منظوری دی گئی۔

اس کے علاوہ وزارت میری ٹائم کے ادارے پی این ایس سی کے 19 ذیلی کمپنیوں کیلئے رعائیتوں کی منظوری ہوئی۔

وزارت انرجی کی مالی سال کیلئے ضمنی گرانٹ کی سمری بھی منظورہوئی۔

وزارت داخلہ کے ہیلی کاپٹرز کی مرمت کیلئے 14.62 ملین روپے کی ضمنی گرانٹ کی منظوری جب کہ ایف سی کے ڈی آئی خان کے منصوبے کیلئے 431.88 ملین روپے کی ضمنی گرانٹ کی بھی منظوری دی گئی۔

جانسن اینڈ جانسن کی بوسٹر ڈوز اومیکرون کے خلاف 85 فیصد مؤثر

جنوبی افریقا کے تحقیقی و طبی ماہرین نے جانسن اینڈ جانسن کی بوسٹر ڈوز کو اومی کرون کے خلاف 85 فیصد تک مؤثر قرار دے دیا۔
بین الاقوامی میڈیا رپورٹ کے مطابق جنوبی افریقا کے میڈیکل ریسرچ کونسل نے حال ہی میں یہ تحقیق کی ہے جس میں 69 ہزار ہیلتھ ورکرز کو شامل کیا گیا۔
طبی عملے کے اراکین کو ایک ماہ اور پانچ دن کے دوران کورونا ویکسین کی دو خوراکوں کے علاوہ جانسن اینڈ جانسن کی بوسٹر ڈوز بھی لگائی گئی۔
تحقیق میں یہ بات سامنے آئی کہ دو خوراکیں لگوانے والے ہیلتھ ورکرز کو اومیکرون سے 63 فیصد تحفظ ہوا جبکہ بوسٹر ڈوز لگنے کے بعد یہ شرح بڑھ کر 85 فیصد تک پہنچ گئی۔ افریقی ماہرین کے مطابق اومیکرون کے مریضوں کو بھی بوسٹر ڈوز لگائی گئی۔
تحقیقی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ جانسن اینڈ جانسن ویکسین اور بوسٹر ڈوز اومیکرون اور ڈیلٹا ویریئنٹس کے خلاف 85 فیصد مزاحمت پیدا کرتی ہے۔