All posts by Saqib Nasir

امریکا کا امارات کو ایف 35 لڑاکا طیارے فروخت کرنے کا فیصلہ

(ویب ڈیسک)امریکا نے متحدہ عرب امارات ( یو اے ای) کو ایف 35 لڑاکا طیارے فروخت کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

عرب خبر رساں ادارے کے مطابق وائٹ ہاؤس نے متحدہ عرب امارات کو طیارے فروخت کرنے سے متعلق کانگریس کو آگاہ کردیا جس میں وائٹ ہاؤس نے کانگریس کی خارجہ امور کمیٹی کے سربراہ کو بتایا کہ امریکا متحدہ عرب امارات کو 50 ایف 35 طیارے فروخت کرے گا۔

خارجہ امور کمیٹی کے سربراہ ڈیموکریٹک کانگریس رکن ایلیٹ اینجل نے امریکی حکومت کے فیصلے پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ حکومت کا یہ اقدام خلیج میں عسکری توازن کو تبدیل کرے گا اور اس سے اسرائیلی عسکری برتری پر بھی فرق پڑے گا۔

خارجہ امور کمیٹی کے سربراہ نے کانگریس سے مطالبہ کیا کہ طیاروں کی فروخت کا بغور جائزہ لیا جائے کیونکہ ایف 35 جاسوسی کی سطح پر ایک گیم چینجر ہے اور جلد بازی میں طیاروں کی فروخت کسی کے مفاد میں نہیں ہے جب کہ یو اے ای کو طیاروں کی فروخت میں یقینی بنایا جائے کہ اسرائیل کی معیاری فوجی برتری برقرار رہے۔

گستاخانہ خاکوں پر فرانسیسی صدر کا رویہ نفاق پیدا کرنے والا ہے، صدر مملکت

عید میلاد النبی ﷺ کی مناسبت سے منعقدہ رحمت للعالمین قومی کانفرنس کے موقع پر صدر مملکت نے کہا کہ ہمیں انسانیت کا درس دینے والے مغربی ممالک کا طرز عمل یہ ہے کہ 100 مہاجرین کو بھی برداشت کرنے سے انکاری ہیں اور انہیں سمندر میں ڈوبنے کے لیے چھوڑ دیتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ دوسری جانب ایک مسلمان کا کردار یہ ہے کہ 35 لاکھ مہاجرین کو قبول کرنے پر آج تک کسی سیاسی رہنما نے یہ نہیں کہا کہ انہیں واپس بھیجا جائے اور وہ ہمیں انسانیت سکھانے آتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ یورپ کے 16 ممالک میں خدا یا نبی کے انکار سے بڑا یہ قانون بنایا گیا کہ ہولوکاسٹ (یہودیوں کے قتل عام) کا انکار کرنے پر تو فوجداری مقدمہ چلایا جائے گا اور سزا ہوگی اور اس کی وجہ یہ ہے کہ بہت سارے یہودیوں کو قتل کیا گیا اس لیے اگر کوئی انکار کرے تو انہیں تکلیف پہنچتی ہے، ہم مانتے ہیں اس بات کو، لیکن مسلمانوں کی تکلیف کا تمہیں احساس نہیں جبکہ ریاست کی بنیاد پر یہ کام ہورہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ میں مذمت کرتا ہوں کہ فرانسیسی صدر ایمانوئیل میکرون نے گستاخانہ خاکوں کے معاملے پر جو رویہ اپنایا اس سے وہ خود اپنے ملک میں نفاق پیدا کررہے ہیں۔

صدر مملکت کا کہنا تھا کہ دنیا بدل گئی ہے اب دنیا کا حال یہ ہے کہ عالمی فورمز میں اخلاقیات اور انسانی اقدار پر نہیں بلکہ تجارت اور پیسے کی بنیاد پر فیصلے کیے جاتے ہیں جیسا کہ کشمیر کے معاملے پر ہوا جن ممالک کے بھارت کے ساتھ تجارتی تعلقات تھے ان کا جھکاؤ اسی کی طرف تھا اس میں اسلامی دنیا کے ممالک بھی شامل ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ اس وقت دنیائے اسلام ایک قیادت کی تلاش میں ہے اور عمران خان نے پہلی مرتبہ اقوامِ متحدہ میں ناموس رسالت کے حوالے سے تقریر کر کے یہ واضح کیا کہ گستاخانہ حرکات مسلمانوں کے لیے تکلیف دہ ہیں۔

صدر مملکت نے کہا کہ مسلمان ایک ابھرتی ہوئی اور آگے بڑھنے والی قوم ہے لیکن اس کا کردار ائمہ، منبر اور محراب کے بغیر ممکن نہیں، ضرورت اس بات کی ہے کہ ہم نبی ﷺ کے اس راستے پر چلنے کی کوشش کریں جس کا تعین خود رسول اکرم ﷺ نے کیا اور مسجد میں بیٹھ کر تمام مسائل حل کیے جاتے تھے۔

صدر مملکت عارف علوی نے کہا کہ مسجد منبر اور محراب ایسی چیزیں ہیں جو رسول ﷺ کے زمانے میں مرکز تھے۔

انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس میں پاکستانیوں نے کیا کیا جبکہ بھارت، جہاں ہمارے جیسے لوگ ہی بستے ہیں ان کے مقابلے کورونا کو شکست دی اور دنیا اب کہتی ہیں کہ پاکستان سے سیکھو۔

انہوں نے کہا کہ میرے مطابق علمائے کرام کے ساتھ مل کر ہم نے جو طے کیا تھا کہ مساجد کھلی رکھی جائیں گی، اللہ سے لو لگائے رکھیں گے، معافی مانگتے رہیں گے، نماز تراویح کی ادائیگی جاری رکھی شاید اس لیے اللہ پاک کو ہم پر رحم آیا۔

صدر مملکت نے کہا کہ نبی ﷺ نے جس قدر غریب کی فکر کی وہ اشرافیہ والے اور قانونی کے اعتبار سے خواتین اور کمزوروں کے استحصال والے عرب معاشرے میں سب سے بڑی تبدیلی تھی، انہوں نے اپنے پیٹ پر پتھر باندھ لوگوں کو اپنے گھر کا کھانا دے دیا۔

ان کا کہنا تھا کہ غریب کا احساس معاشرے میں سب سے بڑی تبدیلی ہے جو نبی ﷺ لے کر آئے اور کورونا کے دوران پاکستانیوں نے بھی اس پر عمل کیا، مخیر حضرات کے علاوہ حکومت نے بھی احساس پروگرام کے تحت غریبوں کی فکر کی تو اللہ پاک نے ہماری فکر کی اور دنیا نے پھر یہ منظر ملاحظہ کیا۔

ایاز صادق نے غیر ذمہ دارانہ بات کی لیکن ان کی حب الوطنی پر شک نہیں: شاہ محمود

اسلام آباد(ویب ڈیسک): وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ ایاز صادق نے بالکل غیر ذمہ دارانہ بات کی لیکن ان کی حب الوطنی پر شک نہیں کرسکتا۔

جیونیوز کے پروگرام ’آج شاہزیب خانزادہ کے ساتھ‘ میں گفتگو کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ’ہمیں کچھ اطلاعات تھیں کہ بھارت کو پاکستان کے ہاتھوں جو شکست ہوئی اور پاکستانی ائیرفورس کے منہ توڑ جواب پر ندامت اٹھانا پڑی اس کی بوکھلاہٹ میں بھارت کوئی جارحانہ حرکت کرسکتا ہے، اس پر پارلیمنٹ اور پارلیمانی قیادت کو اعتماد میں لینے کا فیصلہ کیا گیا‘

انہوں نے کہا کہ ’اس حوالے سے ایک میٹنگ ہوئی تھی جس میں سینئر قیادت تھی اور میں بھی موجود تھا ہم نے پارلیمانی رہنماؤں کو اعتماد میں لیا، وزیراعظم نے اس میٹنگ میں آنا تھا لیکن وہ ایک اہم انٹرنیشنل کال کے انتظار میں تھے اور اس میں تاخیر کی وجہ سے میٹنگ میں نہیں آسکے‘۔

وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ ’ایاز صادق نے جو گفتگو کی وہ بالکل غیر ذمہ دارانہ ہے،  ان کی حب الوطنی پر شک نہیں کرسکتا لیکن ایاز صادق جوش خطابت میں بہہ گئے اور  وہ کہہ دیا جس کا فائدہ آج بھارت اٹھانے کی کوشش کررہا ہے، پاکستانی کے بیانیے اور کامیابی کو بھارت نیچا دکھانے کی کوشش کررہا ہے جب کہ بھارت یہاں سے دم دبا کر بھاگا تھا‘۔

انہوں نے مزید کہا کہ’ پاکستان نے ابھی نندن کو رہا کرنے کا مدبرانہ فیصلہ کیا اور یہ فیصلہ اس میٹنگ کے بعد ہوا، پاکستان کے فیصلے کو دنیا نے سراہا، عمران خان نے معاملات کو ڈی فیوز کیا اور صورتحال کو بڑھنے سے روکا‘۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ ’حیران ہوں کہ ایاز صادق نے کنفیوژن میں بات کی، یقین نہیں آرہا کہ انہوں نے کس بنیاد پر یہ بات کی، اس کا سر پاؤں دکھائی نہیں دے رہا، ہم نے اعتماد میں لینے کے لیے اجلاس بلایا تھا اور حیران ہوں کہ کیا رنگ دے دیا گیا‘۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ ’بھارتی حرکت سے ہمیں کوئی پریشانی نہیں تھی اور ہم پوری طرح سے تیار تھے، اگر بھارت کوئی جارحیت کرتا تو جو جوابی کارروائی ہم نے کرنا تھی اس پر سیاسی اور عسکری قیادت میں مکمل مطابقت تھی، اس میں کوئی شک و شبہ نہیں تھا لیکن ضرورت محسوس کی گئی کہ نازک صورتحال پر قیادت کو اعتماد میں لیا جائے‘۔

ان کا کہنا تھا کہ ’اس وقت ہمارے بہت ذمہ دار اور سینئر لوگ اپنے ذاتی مفادات کے تابع ہوئے ہیں، وہ حکومت اور ریاست کے مفادات میں فرق نہیں کر پارہے، انہیں اندازہ نہیں ان کے بیانیے سے کیا وہ حکومت کو یا ریاست کے مفادات کو ٹھیس پہنچا رہے ہیں۔

ملک بھر میں جشن ولادت با سعادت ﷺ عقیدت و احترام کیساتھ منایا جا رہا ہے

(ویب ڈیسک)نبی آخر الزماں حضرت محمد مصطفیٰ ﷺ کی ولادت کی مناسبت سے ملک بھر میں 12 ربیع الاول مذہبی جوش و جذبے اور عقیدت و احترام کے ساتھ منایا جا رہا ہے۔

آج دن کا آغاز نماز فجر کے بعد نبی اکرم ﷺ پر درود و سلام کی محافل سے ہوا اور ملکی سلامتی و خوشحالی اور امن و امان کے لیے خصوصی دعائیں مانگی گئیں۔

وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں 31 جب کہ صوبائی دارالحکومتوں میں 21، 21 توپوں کی سلامی دی گئی۔

جشن عید میلاد النبی کے موقع پر لاہور کینٹ یادگار شہداء پر پاک فوج کے چاک و چوبند دستے نے دن کا آغاز 21 توپوں کی سلامی دے کر کیا۔

اس موقع پر فضا پاک فوج کے جوانوں کے پرجوش نعروں نعرے تکبیر اللہ اکبر سے گونج اٹھی، تقریب میں پاک فوج کے اعلی افسران نے بھی شرکت کی۔

جشن ولادت با سعادت کے موقع پر ملک بھر کے گلی کوچوں، سڑکوں، شاہراہوں اور بازاروں کو انتہائی خوبصورتی کے ساتھ سجایا گیا ہے اور شہر شہر قریہ قریہ نبی مہربان ﷺ کی شان میں قصیدے پڑھے جا رہے ہیں۔

کراچی میں نیو میمن مسجد سے نشتر پارک تک جلوس نکالا جائے گا

ملک بھر کی طرح کراچی میں بھی جشنِ ولادت باسعادت حضرت محمد ﷺ کے موقع پر جلوس نکالے جائیں گے، مرکزی جلوس سمیت شہر بھر میں نکلنے والے جلوسوں کی سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں۔

شہر بھر میں مساجد، عمارتیں اور شاہراہیں برقی قمقموں سے سجائی گئی ہیں، عاشقان رسول ﷺ کی جانب سے محافل میلاد منقعد کی جا رہی ہیں۔

جشن عید میلادالنبی ﷺ کا مرکزی جلوس جماعت اہلسنت، سنی تحریک اور انجمن نوجوان اسلام کے تحت ایم اے جناح روڈ نیو میمن مسجد سے نشتر پارک تک نکالا جائے گا، جلوس بولٹن مارکیٹ، ریڈیو پاکستان اور نمائش چورنگی سے ہوتا ہوا نشتر پارک پر اختتام پزیر ہو گا۔ جلوس کے اختتام پر نشترک پارک میں عید میلادالنبی کانفرنس منقعد ہو گی جس سے علمائے کرام خطاب کریں گے۔

سیکیورٹی کے سخت انتظامات

مرکزی جلوس کے راستوں اور گزرگاہوں کی سکیورٹی کے لیے 5 ہزار کے قریب اہلکاروں سمیت ایس آئی یو کے ماہر نشانہ باز بھی تعینات ہیں۔

جلوس کے موقع پر ایم اے جناح روڈ کے اطراف کی تمام گلیاں کنٹینر لگا کر بند کر دی گئی ہیں، جلوس کی گزرگاہ میں آنے والی دکانوں کو بھی سیل کیا گیا ہے جب کہ رات گئے سندھ حکومت نے صوبے بھر میں دفعہ 144 کے تحت موٹر سائیکل کی ڈبل سواری پر ایک روز کی پابندی بھی عائد کر دی ہے۔

متبادل ٹریفک روٹس

جشن عید میلاد النبی ﷺ کے جلوس کے موقع پر ٹریفک کی روانی بحال رکھنے کے لیے ٹریفک پولیس کی جانب سے متبادل راستے بھی فراہم کیے گئے ہیں۔

حیدرآباد میں بھی جشن عید میلاد النبی صلی اللہ علیہ وسلم مذہبی جوش و جذبے کے ساتھ منائی جا رہی ہے۔

حیدر آباد میں بھی عید کا سماں

حیدرآباد شہر کی گلی محلوں سمیت بازاروں، شاہراہوں اور سرکاری عمارتوں کو برقی قمقموں سے منور کر دیا گیا ہے، جگہ جگہ میلاد کی محفلیں بھی سجائی جا رہی ہیں۔

گوجرانوالہ میں 100 من کھیر کی دیگ

گوجرانوالہ میں بھی جشن عید میلاد النبی صلی اللہ علیہ وسلم کے موقع پر شہر بھر کی مساجد اور گلی محلوں کو خوبصورتی کے ساتھ سجایا گیا ہے، شہر بھر میں عید کا سماں ہے جب کہ رات گئے عاشقان رسول صلی اللہ علیہ وسلم کی جانب سے ریلیاں بھی نکالی گئیں۔

گوجرانوالہ کے علاقے ونیہ والا میں 100 من کھیر کی دیگ بھی تیار کی جا رہی ہے جسے جلوسوں کے شرکاء کو کھلایا جائے گا۔

63 من وزنی کیک

چنیوٹ میں جشن ولادت با سعادت کے موقع پر 63 من وزنی کیک کاٹا گیا جب کہ ملتان میں جامعہ مسجد بہار مدینہ کی جانب سے سورج میانی میں میلاد ریلی کا انعقاد کیا گیا جس میں خانہ کعبہ اورمسجد نبوی ﷺ کے ماڈلزکی زیارتیں بھی رکھی گئیں۔

نارووال میں بھی نذو نیاز

نارووال کی تحصیل شکر گڑھ میں جشن عید میلاد النبی صلی اللہ علیہ وسلم کے مؤقف پر شہر بھر کی گلیوں اور بازاروں کو سجایا گیا ہے، مساجد میں حمد و نعت کی محافل سجائی جا رہی ہیں اور نذر و نیاز کا تیاریاں بھی عروج پر ہیں۔

آزاد کشمیر میں بھی شہریوں نے شہر بھر کو رنگ برنگی برقی قمقموں سے سجایا ہے جب کہ میر پور میں مرکزی میلاد کمیٹی کی جانب سے شہر کی مرکزی شاہراہوں پر چراغاں کا اہتمام کیا گیا ہے۔

سیاسی بیان بازی سے فوج میں شدید غصہ،قومی سلامتی کے معاملات اور تاریخ مسخ کی گئی:ترجمان پاک فوج

(ویب ڈیسک)پاک فوج کے ترجمان میجر جنرل بابر افتخار  کا کہنا ہے کہ کل ایک ایسا بیان دیا گیا جس میں تاریخ کو مسخ کرنے کی بات کی گئی۔

راولپنڈی میں پرس بریفنگ دیتے ہوئے میجر جنرل بابر افتخار کا کہنا تھا کہ آج کی پریس کانفرنس کا ون پوائنٹ ایجنڈا ریکارڈ کی درستگی ہے، گزشتہ روز ایک بیان دیا گیا جس میں تاریخ کو مسخ کرنے کی بات کی گئی۔

انہوں نے کہا کہ ایسے منفی بیانیے کے قومی سلامتی پر براہ راست منفی اثرات مرتب ہوتے ہیں، منفی بیانیہ بھارت کی شکست اور ہزیمت کو کم کرنے کے لیے استعمال کیا جا رہا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پلوامہ واقعے کے بعد بھارت نے 26 جنوری کو ناصرف منہ کی کھائی بلکہ پوری دنیا میں ہزیمت بھی اٹھائی، دشمن کے جہاز جو بارود پاکستان کے عوام پر گرانے آئے تھے وہ خالی پہاڑوں پر پھینک کر چلے گئے۔

ترجمان پاک فوج نے بتایا کہ افواج پاکستان کے چوکنا رسپانس نے دشمن کے عزائم کو ناکام بنایا، پاکستان نے اعلانیہ ہندوستان کو دن کی روشنی میں جواب دیا، دشمن کے 2 جہاز گرائے، پائلٹ ابھی نندن کو گرفتار کیا گیا، اللہ کی نصرت سے ہمیں ہندوستان کے خلاف واضح فتح نصیب ہوئی اور پوری قوم کا سر فخر سے بلند ہوا، پاکستان کی فتح کو دنیا بھر میں تسلیم کیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ بھارتی پائلٹ ابھی نندن کی رہائی کو کسی اور چیز سے جوڑنا انتہائی گمراہ کن ہے، یہ چیز کسی بھی پاکستانی کے لیے قابل قبول نہیں ہے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ ابھی نندن کو جینیوا کنونشن کے تحت رہا کرنے کا فیصلہ کیا گیا، پاکستان کے ایک ذمہ دار ریاست کے طور پر ایک موقع دیتے ہوئے ابھی نندن کو رہا کرنے کا فیصلہ کیا، پاکستان کے ابھی نندن کے رہا کرنے کے فیصلے کو پوری دنیا نے سراہا۔

ہندوستان خطے میں ریاستی دہشت گردی کا مرکز ہے، دفتر خارجہ

اسلام آباد(ویب ڈیسک): امریکا اور بھارت کی جانب سے مشترکہ طور پر پاکستان سے دہشت گرد گروپوں کے خلاف کارروائی کے مطالبے پر دفتر خارجہ خارجہ نے مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے دہلی کے اتحادیوں سے کہا ہے کہ وہ خطے میں سیکیورٹی کے معاملات پر بھارتی پروپیگنڈے میں نہ آئیں اور ہندوستان خطے میں ریاستی دہشت گردی کا مرکز ہے۔

دفتر خارجہ نے امریکا اور بھارت کے بیان کا منہ توڑ جواب دیتے ہوئے کہا کہ یہ اہم ہے کہ شراکت دار ممالک جنوبی ایشیا میں امن و سلامتی کے امور پر ایک معقول نظر رکھیں اور یک طرفہ اور زمینی حقائق سے ماورا معاملات کی توثیق سے باز رہیں۔

امریکا اور بھارت نے سالانہ وزارتی سطح کے مذاکرات کی تیسری نشست کے بعد جاری کردہ اپنے مشترکہ بیان میں پاکستان سے دہشت گردی کے انسداد کے لیے “ٹھوس کارروائی” کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔

امریکہ اور بھارت کے بیان میں کہا گیا تھا کہ وزرا نے پاکستان سے مطالبہ کیا کہ وہ فوری، مستقل اور ناقابل واپسی کارروائی کرے تاکہ اس بات کا یقین کیا جاسکے کہ اس کے زیر اقتدار کوئی بھی علاقہ دہشت گرد حملوں کے لیے استعمال نہ ہو۔

مشترکہ بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ امریکا اور ہندوستان کے وزرائے خارجہ اور دفاع نے دہشت گردوں کی جانب سے دوسروں کی سرزمین استعمال کرنے کے ساتھ ساتھ سرحد پار سے ہونے والی دہشت گردی کی ہر شکل میں شدید مذمت کی۔

امریکا اور بھارت نے اپنے بڑھتے ہوئے اسٹریٹیجک تعاون کے ایک حصے کے طور پر دوطرفہ انسداد دہشت گردی مشترکہ ورکنگ گروپ اور عہدہ طے کرنے والے مذاکرات چیت کے ذریعے سلامتی کے امور پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا۔

دفتر خارجہ نے کہا کہ اس نے امریکا اور بھارت کی جانب سے جاری کیے گئے مشترکہ بیان میں پاکستان کے حوالے سے ‘غیرضروری اور گمراہ کن’ بیان کو مسترد کردیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ مشترکہ بیان “انتخابی اور یکطرفہ” تھا اور اس میں پاکستان کے بارے میں کیے گئے دعوے ‘اعتراضات کے معیار’ پر پورا نہیں اترتے ہیں۔

دفتر خارجہ نے امریکا پر عالمی ذمے داریوں سے پہلو تہی کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ امریکا اگست 2019 کے بعد بھارت کے زیر قبضہ کشمیر میں مقبوضہ علاقے کے الحاق کے نتیجے میں بڑھتی ہوئی انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں صورتحال پر توجہ دینے میں ناکام رہا۔

اس سلسلے میں کہا کہ مشترکہ بیانات میں نہایت خوشگوار انداز اپنانے سے یہ حقیقت چھپ نہیں سکتی کہ ہندوستان ہی غیرقانونی طور پر مقبوضہ جموں و کشمیر سمیت خطے میں ریاستی دہشت گردی کا اعصابی مرکز ہے، اس کے علاوہ مسلمانوں کے خلاف نفرت آمیز رویہ اپنانے والوں کے لیے ایک محفوظ پناہ گاہ ہے۔

دفتر خارجہ نے کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالیوں سے دنیا کی توجہ ہٹانے کی کوشش کر رہا ہے، قابض فوجیوں کے ذریعے وہ خود کو دہشت گردی کا ایک ‘شکار’ بنا کر پیش کر رہا ہے لیکن ہندوستان ایسی تدبیروں سے دنیا کو دھوکا نہیں دے سکتا۔

زمبابوے سے میچز کیلیے قومی ٹیم کے اسکواڈ کا اعلان

راولپنڈی: پاکستان کرکٹ بورڈ نے زمبابوے سے میچز کے لیے 15 رکنی اسکواڈ کا اعلان کردیا۔

قومی ٹیم کے 15 رکنی اسکواڈ میں بابر اعظم، امام الحق، عابد علی، فخر زمان، حارث سہیل، محمد رضوان، افتخار احمد، خوشدل شاہ، فہیم اشرف، عماد وسیم، عثمان قادر، وہاب ریاض، شاہین آفریدی، حارث رؤف اور موسیٰ خان بھی شامل ہیں۔

بابراعظم کی پریس کانفرنس

دوسری جانب راولپنڈی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے قومی ٹیم کے کپتان بابراعظم نے کہاکہ زمبابوے کے تجربہ کارکھلاڑی ہیں اور ہم نے ان کے خلاف اچھی پلاننگ کی ہے، لڑکوں کو یہی پیغام دیا ہے کہ جو آپ کی صلاحیت ہے اس ہی کے مطابق کھیلیں۔

انہوں نےکہا کہ کپتانی ملنے پر شکریہ ادا کرتا ہوں، کوشش ہے اس کو بہتر بناؤں، میں ہر میچ سے پہلے خود پر اعتماد رکھتا ہوں اور پلاننگ کے مطابق کھیلنے کی کوشش کرتا ہوں۔

قومی کپتان کا کہنا تھا کہ اسٹیڈیم میں شائقین کی غیر موجودگی واقعی یاد آتی ہے، نیشنل ٹی ٹوئنٹی کپ میں بھی شائقین کو بہت یاد کیا تھا۔

خیال رہے کہ زمبابوے کی کرکٹ ٹیم ایک روزہ اور ٹی ٹوئنٹی سیریز کیلئے راولپنڈی میں موجود ہے۔

پہلا ایک روزہ میچ 30 اکتوبر کو راولپنڈی میں کھیلا جائے گا جب کہ دوسرا میچ یکم نومبر اور آخری ایک روزہ میچ تین نومبر کو ہوگا۔

لاہور میں دونوں ٹیموں کے درمیان پہلا ٹی ٹوئنٹی میچ 7 نومبر، دوسرا ٹی ٹوئنٹی 8 نومبر اور تیسرا ٹی ٹوئنٹی میچ 10 نومبر کو کھیلا جانا تھا تاہم اب یہ میچز راولپنڈی میں ہوں گے۔

مغرب اسلام کے خلاف ’دوبارہ صلیبی جنگیں‘ شروع کرنا چاہتا ہے، اردوان

انقرہ(ویب ڈیسک): ترک صدر رجب طیب اروان نے گستاخانہ خاکوں پر فرانس کے ساتھ بڑھتی محاذ آرائی پر کہا ہے کہ مغربی ممالک اسلام کا مذاق اڑا کر ’صلیبی جنگ دوبارہ شروع‘ کرنا چاہتے ہیں۔

 میں بتایا گیا کہ پارلیمنٹ میں اپنی جماعت اے کے پارٹی کے قانون سازوں سے خطاب کرتے ہوئے رجب طیب اردوان کا کہنا تھا کہ حضرت محمد ﷺ کی ذات پر حملوں کے خلاف کھڑا ہونا ’ہمارے لیے عزت کا معاملہ ہے‘ اور ہوسکتا ہے کہ انقرہ طویل محاذ آرائی کی تیاری کرے۔

خیال رہے کہ فرانس سے محاذ آرائی میں اضافہ اس وقت ہوا جب وہاں گزشتہ دنوں ایک استاد نے فرانسیسی میگزین چارلی ہیبڈو میں شائع گستاخانہ خاکے دکھائے، جس کے بعد اس استاد کا سر قلم کردیا گیا۔

تاہم فرانس کی جانب سے گستاخانہ خاکوں کی اشاعت کے اقدام کا دفاع کیا گیا، جس نے مسلم اکثریتی ممالک میں غم و غصے کی لہر کو مزید بڑھا دیا اور مسلم اکثریتی ممالک میں مختلف مقامات پر فرانس کے خلاف مظاہرے بھی کیے گئے۔ مزید یہ کہ ترکی کے غصے میں مزید اضافہ اس وقت کیا گیا جب چارلی ہیپڈو نے اپنے سرورق پر ترک صدر کا تضحیک آمیز کارٹون شائع کیا۔

ترک حکام کا کہنا تھا کہ ترکی ان کارٹون کے جواب میں قانونی اور سفارتی اقدامات اٹھائے گا، ساتھ ہی انہوں نے اسے ’اپنی ثقافتی نسل پرستی اور نفرت پر مبنی مکروہ کوشش‘ قرار دیا۔

میگزین کے سرورق کے معاملے پر فرانس سفارتخانے میں موجود ناظم الامور کو ترک وزارت خارجہ طلب کیا گیا۔

رجب طیب اردوان کا کہنا تھا کہ انہوں نے کارٹون نہیں دیکھا ’کیونکہ میں سمجھتا ہوں کہ ان غیراخلاقی اشاعتوں کو دیکھنا تک غلط ہے‘ اور ان کا غصہ ’ان پر کیے گئے مکروہ حملے‘ کے بجائے پیغمبر اسلام ﷺ کی توہین پر ہے۔

انہوں نے اپنے ریکارڈ کے لیے افریقہ اور مشرق وسطیٰ میں نوآبادیاتی طاقتوں کو ’قاتل‘ کے طور پر بیان کرتے ہوئے کہا کہ مغرب ایک مرتبہ پھر ’بربریت کے طور کی طرف چلا گیا ہے‘۔

رجب طیب اردوان کا کہنا تھا کہ وہ واضح طور پر دوبارہ صلیبی جنگیں شروع کرنا چاہتے ہیں،چونکہ صلیبی جنگوں کے بعد سے ان (مسلمانوں) کی زمینوں پر برائی اور نفرت کے بیج بونا شروع کیے گئے اور جب سے امن متاثر ہوا۔

علاوہ ازیں فرانسیسی صدر ایمانیوئل میکرون نے کہا کہ قدامت پسند اسلامی نظریات رکھنے والوں کو روکنے کے لیے کوششیں دوگنی کردیں گے، ساتھ ہی فرانس کی وزارت خارجہ نے انڈونیشیا، ترکی، بنگلہ دیش، عراق اور مورتانیا میں موجود اپنے شہریوں کو سیفٹی ایڈوائس جاری کردی۔

ان شہریوں کو کہا گیا ہے کہ وہ مظاہرون سے دور رہیں اور عوامی اجتماع کو نظرانداز کریں۔

جان بچانے والی 94ادویات کی قیمتوں میں 200فیصد اضافہ

ہائی بلڈ پریشر ،کینسر ،دل کی ادویات ،کتے کے کاٹنے کی ویکسین مہنگی۔ادویات میں ریبزاویکسین ،برنال کریم ،ایپی وال،بروفین،سسپنشن،ایرینک،فورٹ ٹیبلٹ ،نیوربن ٹیبلیٹ ،گلوکوفج ٹیبلیٹ شامل،اضافہ شدہ قیمتیں 30جون 2021تک برقرار رہیں گی

کچھ نہیں پتا اسکول دوبارہ کب بند ہوجائیں گے: سعید غنی

کراچی(ویب ڈیسک): سندھ کے وزیر تعلیم سعید غنی کا کہنا ہےکہ کورونا کے بعد اب اسکول کھلے ہیں لیکن کچھ نہیں پتا کہ دوبارہ کب اسکول بند ہو جائیں گے۔

کراچی کے ایک اسکول میں طلبہ میں ٹیبلیٹس تقسیم کرنے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سعید غنی نے کہا کہ 30 سے زائد نئے اسکولوں میں بھی تعلیم کا سلسلہ جلد شروع کیا جائے گا، سندھ میں 40 ہزار اسکول ہیں اور  ہمیں کسی این جی او کے رحم کرم پر نہیں رہنا چاہیے، ہمیں خود بھی آگے بڑھ کر ایسے اسکول بنانے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کورونا میں اسکول بند رہے اور تعلیم کا نقصان ہوا، اب اسکول کھلے ہیں لیکن کچھ نہیں پتا کہ دوبارہ کب اسکول بند ہو جائیں گے۔

وزیر تعلیم کا کہنا تھا کہ اگر اسکول بند ہوتے ہیں تو ان ٹیبلیٹس کے ذریعے بچے گھر بیٹھ کر آن لائن پڑھ سکتے ہیں البتہ بہت سے علاقوں میں انٹرنیٹ اور دیگر سہولیات نہیں لیکن 60 فیصدعلاقوں میں ایسا ممکن ہے۔

پی ٹی وی، پارلیمنٹ حملہ کیس میں وزیراعظم عمران خان بری

(ویب ڈیسک)انسداد دہشت گردی کی عدالت نے پی ٹی وی پارلیمنٹ حملہ کیس میں وزیراعظم عمران خان کو بری کر دیا۔

انسداد دہشت گردی کی عدالت نے وزیراعظم کی مقدمہ سے بریت کی درخواست پر دلائل سننے کے بعد تین روز قبل فیصلہ محفوظ کیا تھا۔

انسداد دہشتگردی کی عدالت کے جج راجا جواد عباس حسن نے کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے عمران خان کو بری کر دیا جب کہ دیگر ملزمان پر فرد جرم عائد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

عدالت نے اپنے فیصلے میں کہا ہے کہ صدر مملکت کو  استثنیٰ حاصل ہے اس لیے ان کی حد تک تو کیس نہیں چلایا جائے گا لیکن مقدمے میں نامزد دیگر ملزمان پر 12 نومبر کو فرد جرم عائد کی جائے گا۔

عدالت نے مقدمے میں نامزد ملزمان جن میں وفاقی وزراء شاہ محمود قریشی، پرویز خٹک، شفقت محمود، اسد عمر، اور علیم خان سمیت دیگر شامل ہیں کو آئندہ سماعت پر طلب کر لیا ہے۔

وزیراعظم عمران خان کے وکیل نے بریت کی درخواست پر تحریری دلائل جمع کراتے ہوئے مؤقف اختیار کیا تھا کہ عمران خان کو جھوٹے اور بےبنیاد مقدمے میں پھنسایا گیا، ان کے خلاف کوئی ثبوت نہیں، نہ ہی کسی گواہ نے ان کے خلاف بیان دیا۔

ان کا کہنا تھا کہ چونکہ یہ ایک سیاسی مقدمہ ہے جس میں سزا کا کوئی امکان نہیں اس لیے وزیراعظم عمران خان کو بری کیا جائے۔

پراسیکیوٹر نے عمران خان کے وزیراعظم بننے سے قبل درخواست کی مخالفت کی تھی جب کہ وزیراعظم بننے کے بعد حمایت کر دی اور کہا کہ اگر عمران خان کو بری کر دیا جائے تو انہیں کوئی اعتراض نہیں کیونکہ یہ سیاسی طور پر بنایا گیا مقدمہ ہے جس سے کچھ نہیں نکلنا اور صرف عدالت کا وقت ضائع ہو گا۔ خیال رہے کہ عمران خان اس مقدمہ میں اشتہاری رہ چکے ہیں اور اس وقت ضمانت پر ہیں۔

صدر مملکت عارف علوی، وفاقی وزراء شاہ محمود قریشی، پرویز خٹک، اسد عمر، شفقت محمود، صوبائی وزیر علیم خان اور جہانگیر ترین بھی پی ٹی وی پارلیمنٹ حملہ کیس میں ملزم نامزد ہیں۔

یاد رہے کہ اگست 2014 میں تحریک انصاف اور پاکستان عوامی تحریک نے عام انتخابات میں مبینہ دھاندلی کے خلاف دھرنا دیا تھا جس کے دوران دونوں جماعتوں کے کارکنان نے پولیس رکاوٹیں توڑ کر وزیراعظم ہاؤس میں گھسنے کی کوشش کی تھی جس سے پارلیمنٹ ہاؤس کے گیٹ کو بھی نقصان پہنچا تھا۔ مشتعل کارکنان اور پولیس کے درمیان تصادم میں 3 افراد جاں بحق 560 سے زائد زخمی بھی ہوئے تھے۔

سپریم کورٹ: شہباز شریف کا نام ای سی ایل میں شامل کرنے کی نیب کی اپیل خارج

سپریم کورٹ نے قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل) میں شامل کرنے سے متعلق نیب کی اپیل کو خارج کردیا۔

عدالت عظمیٰ میں جسٹس مشیر عالم کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ نے نیب کی اپیل پر سماعت کی، اس دوران ڈپٹی پراسیکیوٹر جنرل نیب جہانزیب بھروانا پیش ہوئے۔

دوران سماعت نیب کے وکیل نے دلائل دیے کے ای سی ایل میں نام نہ ہونے کی وجہ سے اکثر ملزمان فرار ہوجاتے ہیں، یہی نہیں انکوائری کے مراحل میں بھی مختلف مقدمات میں نامزد 6 ملزمان بھاگ چکے ہیں۔

انہوں نے مؤقف اپنایا کہ ملزم شہباز شریف پر آمدنی سے زائد اثاثے بنانے کا الزام ہے جبکہ ملزم منی لانڈرنگ میں بھی ملوث ہے۔

اس پر عدالتی بینج کے رکن جسٹس منیب اختر نے ریمارکس دیے کہ 4 روز قبل ہی عدالت عظمیٰ کے 10 رکنی فل کورٹ نے منی لانڈرنگ سے متعلق فیصلہ سنایا ہے، آپ فیصلہ پڑھ کر کیوں نہیں آتے۔

انہوں نے ریمارکس دیے کہ جب یہ درخواست دائر کی گئی تھی اس وقت صورتحال مختلف تھی، نیب جس فرد کا نام ای سی ایل میں ڈالنا چاہتا ہے وہ ملک کی نامور شخصیت ہیں۔

بعد ازاں عدالت نے نیب کی اپیل کو خارج کردیا۔

خیال رہے کہ قومی احتساب بیورو نے لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ میں اپیل دائر کی تھی۔

یاد رہے کہ سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف اس وقت منی لانڈرنگ کیس میں جوڈیشل ریمانڈ پر کوٹ لکھپت جیل میں موجود ہیں۔

گزشتہ دنوں ان کے خلاف منی لانڈرنگ کیس کی سماعت کے دوران احتساب عدالت نے نیب کی جانب سے شہباز شریف کے جسمانی ریمانڈ میں توسیع کی استدعا کو مسترد کردیا تھا۔

خیال رہے کہ 29 ستمبر کو قومی احتساب بیورو نے آمدن سے زائد اثاثہ جات اور منی لانڈرنگ کیس میں سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کی ضمانت کی درخواست مسترد ہونے پر انہیں لاہور ہائیکورٹ کے احاطے سے گرفتار کیا تھا۔

منی لانڈرنگ ریفرنس

خیال رہے کہ 17 اگست کو نیب نے احتساب عدالت میں شہباز شریف، ان کی اہلیہ، دو بیٹوں، بیٹیوں اور دیگر افراد کے خلاف منی لانڈرنگ کا 8 ارب روپے کا ریفرنس دائر کیا تھا۔

اس ریفرنس میں مجموعی طور پر 20 لوگوں کو نامزد کیا گیا جس میں 4 منظوری دینے والے یاسر مشتاق، محمد مشتاق، شاہد رفیق اور احمد محمود بھی شامل ہیں۔

تاہم مرکزی ملزمان میں شہباز شریف کی اہلیہ نصرت، ان کے بیٹے حمزہ شہباز (پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر)، سلمان شہباز (مفرور) اور ان کی بیٹیاں رابعہ عمران اور جویریہ علی ہیں۔

ریفرنس میں بنیادی طور پر شہباز شریف پر الزام عائد کیا گیا کہ وہ اپنے خاندان کے اراکین اور بے نامی دار کے نام پر رکھے ہوئے اثاثوں سے فائدہ اٹھا رہے ہیں جن کے پاس اس طرح کے اثاثوں کے حصول کے لیے کوئی وسائل نہیں تھے۔

اس میں کہا گیا کہ شہباز خاندان کے کنبے کے افراد اور بے نامی داروں کو اربوں کی جعلی غیر ملکی ترسیلات ان کے ذاتی بینک کھاتوں میں ملی ہیں، ان ترسیلات زر کے علاوہ بیورو نے کہا کہ اربوں روپے غیر ملکی تنخواہ کے آرڈر کے ذریعے لوٹائے گئے جو حمزہ اور سلیمان کے ذاتی بینک کھاتوں میں جمع تھے۔

ریفرنس میں مزید کہا گیا کہ شہباز شریف کا کنبہ اثاثوں کے حصول کے لیے استعمال ہونے والے فنڈز کے ذرائع کا جواز پیش کرنے میں ناکام رہا۔

اس میں کہا گیا کہ ملزمان نے بدعنوانی اور کرپٹ سرگرمیوں کے جرائم کا ارتکاب کیا جیسا کہ قومی احتساب آرڈیننس 1999 کی دفعات اور منی لانڈرنگ ایکٹ 2010 میں درج کیا گیا تھا اور عدالت سے درخواست کی گئی کہ انہیں قانون کے تحت سزا دے۔

ملک دشمن عناصر پاکستان کے حالات خراب کرنا چاہتے ہیں،شیخ رشید

(ویب ڈیسک)وفاقی وزیر شیخ رشیداحمد نے پشاور مدرسے میں دہشت گردی کی کارروائی کی بھر پور مذمت کی ہے۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ  ملک دشمن عناصر پاکستان کے حالات خراب کرنا چاہتے ہیں، ملک میں بدامنی پھیلانا چاہتے ہیں۔

انھوں نے مزید کہا کہ قوم نے پہلے بھی ملکر ملک دشمنوں کو شکست دی ہے، اب بھی دہشت گردی کا مقابلہ کریں گے، بزدلانہ کاروائی کی جس قدر مذمت کے جائے کم ہے، معصوم بچوں کو نشانہ بنایا گیا۔

واضح رہے کہ پشاور کے علاقے دیر کالونی زرگر آباد میں مدرسے سے ملحقہ مسجد میں دھماکے میں 7 افراد شہید اور 72 زخمی ہوگئے۔

زخمیوں کو ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے تاہم زخمیوں میں سے متعدد کی حالت تشویشناک ہے۔

ذرائع کے مطابق ہسپتالوں میں ایمرجنسی ڈکلیئر اور ڈاکٹروں کی چھٹیاں بھی منسوخ کر دی گئی ہیں۔