All posts by Asif Azam

https://www.facebook.com/asif.azam.33821

شیخ رشید نا اہلی کیس کا فیصلہ محفوظ

اسلام آباد (آئی این پی) سپریم کورٹ نے شیخ رشید کو نااہل قرار دینے سے متعلق کیس پر فیصلہ محفوظ کرلیا‘ مسلم لیگ (ن) کے رہنما شکیل اعوان نے درخواست میں موقف اپنایا کہ شیخ رشید نے اثاثوں کے حوالے سے کاغذات نامزدگی میں غلط بیانی کی‘ درخواست میں استدعا کی گئی کہ اثاثوں سے متعلق غلط بیانی کرنے پر شیخ رشید کو نااہل قرار دیا جائے۔ سپریم کورٹ نے شیخ رشید کو نااہل قرار دینے سے متعلق کیس کا فیصلہ محفوظ کرلیا۔ جسٹس شیخ عظمت سعید کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی۔ شیخ رسید کے خلاف مسلم لیگ (ن) کے رہنما شکیل اعوان نے درخواست دائر کی تھی ۔ شکیل اعوان نے موقف اپنایا کہ شیخ رشید نے اثاثوں کے حوالے سے کاغذات نامزدگی میں غلط بیانی کی۔ اثاثوں سے متعلق غلط بیانی پر شیخ رشید کو نااہل قرار دیا جائے۔ جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے ریمارکس دیئے کہ پانامہ کیس لندن فلیٹس کا تھا مگر نااہل اقامہ پر کردیا گیا پانامہ کیس کے فیصلے میں وضع کئے گئے اصولوں کا اطلاق کیا سب پر نہیں ہوگا؟ پاکستان میں الیکشن لڑنا تو بہت مشکل ہوگیا ہے امریکی صدر کہتے ہیں کہ فلاں ریٹرنز ظاہر نہیں کروں گا یہاں علطی بھی نااہلی ہے۔ شیخ رشید نے اثاثے ظاہر کرنے میں غلطی کی ہے تو بات پانامہ کیس پر آکر رکے گی۔ اصول قانون کے دو معیار نہیں ہوسکتے۔ پانامہ فیصلے میں کہاں طے کیا گیا کہ غلطی جان بوجھ کر ہو یا غیر ارادی نااہلیت ہوگی۔ ایک انگلی کسی کی طرف اٹھاتے ہیئں تو چار اپنی طرف بھی اٹھی ہیں۔ وکیل کہتے ہیں کہ شیخ رشید سے غلطی ہوئی تو پانامہ فیصلے کے تناظر ممیں نااہل کردیا جائے۔
سپریم کورٹ

سعودی ولی عہدسے دوستی پر فخر ہے‘ ڈونلڈ ٹرمپ کا شہزادہ سلمان سے ملاقات پر بیان

نیویارک (نیٹ نیوز) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ مجھے سعودی ولی عہدسے دوستی پر فخر ہے، سعودی عرب نے دہشتگردی اوراس کی فنڈنگ کے خاتمے کے لئے اہم اقدامات کئے ہیں۔تفصیلات کے مطابق سعودی ولی عہدشہزادہ محمد بن سلمان نے ڈونلڈ ٹرمپ سے وائٹ ہاوس میں ملاقات کی اور خطے کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ اس موقع پر امریکی صدرکا گفتگو کرتے ہوئے کہناتھا کہ واشنگٹن اورسعودی عرب کے ساتھ تعلقات بہترہوئے ہیں جبکہ ہم مشرق وسطیٰ میں دہشتگردوں کی فنڈنگ بندکرناچاہتے ہیں، یہی نہیں سعودی عرب نے بھی دہشتگردی اوراس کی فنڈنگ کے خاتمے کے لئے اہم اقدامات کئےہیں۔دوسری جانب سعودی ولی عہدشہزادہ محمد بن سلمان کا کہناتھا کہ ہمارے امریکاسے80برس سے باہمی احترام کی بنیادپرمبنی تعلقات قائم ہیں اور ہم امریکا کے ساتھ تعلقات مزیدبہترکرناچاہتے ہیں جبکہ سعودی عرب اور امریکا 200ارب ڈالر کی سرمایہ کاری پر کام کر یں گے۔

نوازشریف اور مریم نواز مری پہنچ گئے

اسلام آباد (این این آئی)پاکستان مسلم لیگ (ن) کے قائد سابق وزیراعظم نواز شریف اور انکی صاحبزادی مریم نواز مری پہنچ گئے ۔ منگل کو سابق وزیراعظم نواز شریف اور انکی صاحبزادی مریم نواز احتساب عدالت میں پیشی کے بعد خوبصورت موسم کا مزا لینے کیلئے مری پہنچ گئے۔

این آر او ایمنسٹی سکیمیں ختم ، بیرون ملک موجود پاکستانیوں کا پیسہ واپس لایا جائے

اسلام آباد (نمائندہ خصوصی) سابق وفاقی وزیر اطلاعات محمد علی درانی نے سپریم کورٹ سے استدعا کی ہے کہ سیاسی طور پر طاقتور لوگوں کو حکومتی اداروں تک پہنچ سے دور رکھاجائے کیونکہ جب حکومتی ادارے ان لوگوں کے مال تک پہنچتے ہیں تو کوئی این آر او یا ایمنسٹی سکیم آجاتی ہے۔ وہ سپریم کورٹ میں پاکستانیوں کے بیرون ملک مال اور املاک کے حوالے سے کیس کی سماعت کے دوران اپنا مو¿قف بیان کر رہے تھے جس کا چیف جسٹس جناب ثاقب نثار نے سوموٹو ایکشن لیا ہے۔ محمد علی درانی نے بھی اس سلسلے میں 2011ءمیں ایک پٹیشن دائر کی تھی جس کی اس کے ساتھ ہی سماعت ہوتی ہے۔ انہوں نے اس سلسلے میں چیف جسٹس کا شکریہ بھی ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ بنیادی طور پر میرا مو¿قف اور استدلال ہے کہ پاکستانیوں کا ملک سے باہر موجود پیسہ اور املاک واپس لائی جائیں۔ سوئس حکام کے اندازے کے مطابق سوئٹزرلینڈ کے بینکوں میں پاکستانیوں کے دو سو ارب ڈالر موجود ہیں جو پاکستان پر غیرملکی قرضوں سے تین گنا ہیں لوگوں کی بیرون ملک املاک کا اندازہ بھی پانچ سو ارب ڈالر ہے جو یورپی ممالک، دبئی، ملائیشیا اور دیگر مقامات پر ہیں۔ انہوں نے کہا اب پوری دنیا میں الائنس بن گیا ہے کہ ترقی پذیر ممالک کے ووٹ کے پیسے کو کوئی سہولت فراہم نہ کی جائے۔ کرپشن کے مال کے خلاف اقوام متحدہ کا کنونشن 2003ءمیں قانون بنایا کہ جس ملک کا پیسہ ہو وہ اسے واپس لینے کا حق رکھتا ہے۔ اس معاملے کے حوالے سے دنیا میں آٹھ ادارے قائم ہو چکے ہیں۔ یہ ادارے ان ممالک کو معلومات فراہم کرنے کیلئے تیار رہتے ہیں جن کے لوگوں کے پیسے بیرون ملک ہیں لیکن میں یا کوئی شخص انفرادی طور پر یہ معلومات حاصل نہیں کر سکتا۔ یہ معلومات صرف حکومتوں کو دی جاتی ہیں مگر ہمارے ملک نے 2010ءسے اب تک ان اداروں سے کچھ نہیں مانگتا۔ میری استدعا ہے کہ پیسہ واپس لانے کیلئے حکومت کے متعلقہ ادارے ان سے رابطہ کریں۔ انہوں نے بتایا کہ بھارت 2011ءسے 2017ءتک نو ہزار ارب روپیہ واپس لے کر آیا ہے۔ یہ کام وہاں کی حکومت، سپریم کورٹ اور متعلقہ اداروں کی نگرانی میں ہوا۔ ہمارے ہاں پیسہ بیرون ملک لے جانے میں سیاسی طور پر طاقتور لوگ ملوث ہیں جبکہ عوام کا حق ہے کہ یہ ان کی ترقی اور خوشحالی پر خرچ کیاجائے۔

کرپشن کا پیسہ باہر جاتا ہے ، کیوں نہ 100 بڑے لوگ عدالت بلا لیں

اسلام آباد (این این آئی) سپریم کورٹ میں پاکستانیوں کے غیرملکی اکاونٹس سے متعلق کیس میں چیف جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیئے ہیں کہ شیل کمپنیزکو توڑتے ہتھوڑا نہ ٹوٹ جائے،اب چارٹرڈ اکاونٹنٹ ہی رقم واپس لانے میں ہماری مدد کریں گے، کیوں نہ ملک کے 100بڑے لوگوں کوعدالت بلالیں؟۔منگل کو سپریم کورٹ میں چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں تین رکنی بینچ پاکستانیوں کے غیرملکی اکاونٹس سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی۔دوران سماعت جسٹس عمرعطابندیال نے ریمارکس دیئے کہ ہمارے ملک کی کرنسی گر رہی ہے غیرقانونی چینل سے لوگ پیسہ باہرمنتقل کرکے قانونی طریقے سے واپس لے آتے ہیں اوپن مارکیٹ میں ڈالرخرید کر سب کچھ پاک کرلیاجاتاہے۔جسٹس اعجازالاحسن نے کہا کہ منی چینجرکواچھی پرسنٹیج دیں تووہ زرمبادلہ کابندوبست کردیتاہے۔اسپین،ملائشیا ،دوبئی، امریکہ اور فرانس میں لوگوں نے املاک خرید رکھی ہیں، جن لوگوں نے یہ گتھیاں بنائی ہیں وہی انہیں سلجھائیں گے،یہ سب کی ذمہ داری ہے کہ قوم کا پیسہ واپس لایا جائے،شیل کمپنیوں کو توڑتے ہتھوڑا نہ ٹوٹ جائے اب چارٹرڈ اکاﺅنٹنٹ ہی رقم واپس لانے میں ہماری مدد کریں گے ہم نے پاکستان سے بھاگ کر نہیں جانا ،ہمارے بچوں کا ہم پر حق ہے بچوں کو ایسا ملک دے کر جائیں جہاں وہ خوش و خرم رہیں،کیوں نہ ملک کے 100بڑے لوگوں کوعدالت بلالیں ؟ان لوگوں کوبلاکرپوچھ لیں اپنی بیرون ملک اثاثوں کی تفصیل دیں، ممکن ہے بڑے لوگ ہماری بات مان کر تفصیلات دے دیں، کتنے لوگ ملک چھوڑ کرچلے جائیں گے؟ اپنے بچوں کوبہترین پاکستان دیناہے۔ جسٹس اعجازالاحسن نے ریمارکس دیئے کہ بھارتی سپریم کورٹ نے حکومت کو بیرون ملک اکاونٹس کی تفصیلات لینے کاحکم دیاہے۔گورنراسٹیٹ بینک نے کہا کہ بیرون ملک اثاثوں کی تصدیق ہوجائےگی لیکن وقت لگے گا،پوری دنیامیں ڈیکلئیرڈ اثاثوں کے گرد گھیراتنگ کیاجارہاہے ۔ نجی ٹی وی کے مطابق چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ گھیراتنگ کرنے سے آپ کی کیامراد ہے ؟یہاں پاکستان میں کیسے گھیراتنگ ہوگا ؟۔گورنراسٹیٹ بینک نے کہا کہ پورے ملک میں کرنسی کی آزادانہ نقل و حرکت ہو رہی ہے ¾فارن کرنسی سے متعلق قوانین میں ترمیم کی ضرورت ہے، قانون فارن کرنسی ایکسچینج چلانے والوں کےلئے بڑا نرم ہے، پیسے کی منتقلی کے حوالے سے لیگل ریجیم کی ضرورت ہے۔چیف جسٹس نے بیرون ملک سے رقم واپس لانے کےلئے ورکنگ گروپ تشکیل دینے کاعندیہ دے دیا اور کہا کہ ورکنگ گروپ منی لامڈرنگ اور رقم لانے سے متعلق تجاویز دےگا ورکنگ گروپ کی تجاویز پارلیمنٹ کے سامنے رکھیں گے،معاملہ پارلیمنٹ کے سامنے رکھنے کے بعد ہم بری الذمہ ہوں گے ،ایساخوف پیدانہیں کرناچاہتے جوہماری معیشت کےلئے نقصان دہ ہو۔جسٹس اعجاز الاحسن نے استفسار کیا کہ کیا پاکستان کے اکاﺅنٹس سے متعلق سوئس حکام سے معلومات مانگی ہے؟گورنر اسٹیٹ بینک نے کہا کہ معلوم نہیں کہ سوئس حکام کے پاس معلومات ہیں یا نہیں۔جسٹس اعجاز الاحسن نے ریمارکس دیئے کہ حکومت سوئس حکام سے معلومات مانگتی تو ہو سکتا ہے مل جاتیں۔چارٹرڈ اکاﺅنٹنٹ نے کہا کہ بیرون ملک تین اقسام کے اثاثے منتقل ہوئے، عوام کے بیرون ملک پیسے پر کوئی رعایت نہیں ہونی چاہیے، بیرون ملک منتقل پیسے کی ایک قسم وہ بھی ہے جس پر ٹیکس نہیں دیا گیا،ایسا پیسہ بھی منتقل ہوا جس پر ٹیکس ادا کیا گیا، بیرون ملک آف شور ٹرسٹ بنا کر بنا کر اثاثہ رکھا جاتا ہے، دیانت دار لوگوں کےلئے فارن کرنسی اکاﺅنٹس بند نہیں کرسکتے، ٹیکس ادا نہ کرنے والوں کو فارن کرنسی اکاﺅنٹ سے رقم منتقل کرنے کی اجازت نہیں ہونی چاہیے، کرپشن اور مجرمانہ فعل کی رقم بیرون ملک نہیں جانی چاہیے، 2001ءمیں نان ریذیڈنٹ کو 182دن کی رعایت دے دی گئی۔ دوران سماعت چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ پاکستانیوں کے بیرون ملک اکاو¿نٹس ہیں، خیال کیا جاتا ہے ان میں بڑی رقم غیرقانونی ہے، غیرملکی اکاو¿نٹس میں موجود پیسے کوواپس کیسے لانا ہے؟ پاکستانیوں کی بیرون ملک املاک بھی ہیں،کیا ان کو چھوڑ دیں؟ ان املاک کو واپس کیسے لایاجاسکتاہے؟ آرام سے کیس چلانا ہے۔چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ ہم صرف حکومت کی مدد کرنا چاہتے ہیں کہ غیر ملکی اکاو¿نٹس میں رکھی گئی رقم واپس لائی جائے۔جسٹس عمر عطا بندیال نے کہا کہ بے ایمان لوگوں کوخصوصی مراعات دی جاتی ہیں، غیرقانونی چینل سے لوگ پیسہ باہرمنتقل کرکے قانونی طریقے سے واپس لے آتے ہیں، اوپن مارکیٹ میں ڈالرخرید کر سب کچھ پاک کرلیا جاتا ہے۔جسٹس اعجاز الاحسن نے ریمارکس دیئے کہ منی چینجر کو اچھی پرسنٹیج دیں تو وہ زرمبادلہ کا بندوبست کردیتا ہے۔گورنر اسٹیٹ بینک نے عدالت کو بتایا کہ نیب نے بیرون ممالک سے معلومات مانگی ہیں۔ اس پر چیف جسٹس نے کہا کہ اسپین،ملائشیا ،دبئی، امریکا اور فرانس میں لوگوں نے املاک خرید رکھی ہیں، جن لوگوں نے یہ گتھیاں بنائی ہیں وہی انہیں سلجھائیں گے، یہ سب کی ذمہ داری ہے کہ قوم کا پیسہ واپس لایا جائے۔جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ اب چارٹرڈ اکاو¿نٹنٹ ہی رقم واپس لانے میں ہماری مدد کریں گے، ہم نے پاکستان سے بھاگ کر نہیں جانا، ہمارے بچوں کا ہم پرحق ہے, بچوں کو ایسا ملک دے کر جائیں جہاں وہ خوش و خرم رہیں۔چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دیئے کیوں نہ ملک کے 100بڑے لوگوں کوعدالت بلالیں؟ ان لوگوں کو بلاکر پوچھ لیں اپنی بیرون ملک اثاثوں کی تفصیل دیں، ممکن ہے بڑے لوگ ہماری بات مان کرتفصیلات دے دیں۔گورنر اسٹیٹ بینک نے عدالت کو بتایا کہ بیرون ملک اثاثوں کی تصدیق ہوجائےگی لیکن وقت لگےگا، پوری دنیا میں ڈکلیئرڈ اثاثوں کے گرد تھیرا تنگ کیا جارہا ہے۔اس پر چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ گھیراتنگ کرنے سے آپ کی کیامراد ہے؟یہاں پاکستان میں کیسے گھیرا تنگ ہوگا؟گورنر اسٹیٹ بینک نے کہا کہ پورے ملک میں کرنسی کی آزادانہ نقل و حرکت ہو رہی ہے، فارن کرنسی سے متعلق قوانین میں ترمیم کی ضرورت ہے، قانون فارن کرنسی ایکسچینج چلانے والوں کے لیے بڑا نرم ہے۔جسٹس عمر عطا بندیال نے ریمارکس دیئے کہ ہمارے ملک کی کرنسی گررہی ہے، کرنسی گرنے سے بیرونی قرضوں پر بھی فرق پڑتا ہے۔ گورنر اسٹیٹ بینک نے کہا کہ عدالت کے نوٹس پر اب کام ہو رہا ہے۔معزز چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ عدالت کو اختیارات سے تجاوز کا طعنہ دیا جاتا ہے، ایساخوف پیدانہیں کرناچاہتے جو ہماری معشیت کے لیے نقصان دہ ہو۔جسٹس اعجاز الاحسن نے گورنر اسٹیٹ بینک سے استفسار کیا کہ کیا پاکستان کے اکاو¿نٹس سے متعلق سوئس حکام سے معلومات مانگی ہے؟ گورنر اسٹیٹ بینک نے بتایا کہ معلوم نہیں کہ سوئس حکام کے پاس معلومات ہیں یا نہیں۔

پشاورزلمی لابنگ میں سب سے بہترین فرنچائز

لاہور(آئی این پی)تین سالوں سے یواے ای کے میدانوں پر کھیلی جارہی پاکستان سپرلیگ میں ٹیموں کیلئے ابتدائی فتوحات حاصل کرنے کے بعد سب سے اہم ترین مرحلہ اپنے کھلاڑیوں کو پاکستان میں کھیلنے پر راضی کرنا ہوتا ہے جس میں پشاورزلمی سب سے مضبوط دکھائی دیتی ہے جس کے گزشتہ سال کی طرح کم وبیش سبھی کھلاڑی پاکستان میں کھیلنے پر تیار ہیں جن کا واحد پلیئرڈیوین اسمتھ ذاتی وجوہات کی بنا پرلاہور میں ایلیمنٹری میچ نہیں کھیل رہا۔اس سے اندازہ لگایا جاسکتاہے کہ پشاورزلمی کی لابنگ کس قدر مضبوط ہے۔ان کے غیرملکی کھلاڑی خصوصا کپتان ڈیرن سیمی کا پاکستان سے اور پاکستانی شائقین کا ان سے لگاﺅ ڈھکاچھپانہیں ہے۔غیرملکی اسٹار کرکٹرزا ور پاکستانی شائقین کو ایک دوسرے کے قریب لانے میں پشاورزلمی کی ٹیم انتظامیہ کا کلیدی کردار ہے۔

دوسری جانب، گزشتہ برس کی طرح اس بار بھی اہم میچز کے مرحلے میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرزسب سے زیادہ متاثر ہوئی ہے جس کے اہم ترین کرکٹرزنے وعدہ خلافی کرتے ہوئے پاکستان آنے سے انکارکیا۔

ضرورت پڑنے پر فائنل کھیلنے کا رسک لوں گا

دبئی (آئی این پی)قومی ٹیم کے سابق کپتان مصبا ح الحق کا کہنا ہے کہ جب ٹیم میں آپ کی جگہ لینے کیلئے کھلاڑی موجود ہوں تو یہ ضروری نہیں ہوتا کہ آپ کھیلیں گے یا نہیں ۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مصبا ح الحق کا کہنا تھا کہ لیوک رونچی جس طرح سے کھیل رہاہے وہ زبردست ہے ، ا س نے بنگلہ دیش پریمیئر لیگ میں بھی عمد ہ پرفارم کیا تھا اور یہاں بھی تقریبا ہر میچ میں اس نے ٹیم کو عمدہ آغاز فراہم کیا ہے ،ہمارے لیے یہ خوشی کی بات ہے کہ اوپنرز ہمیں ایسا آغاز فراہم کررہے ہیں کہ میچ کا فیصلہ 6اوورز میں ہی ہوجاتا ہے ۔اپنے انجری کے بارے میں مصباح الحق کا کہنا تھا کہ یہ ہیئر لائن فریکچر ہے اور اگر ٹیم کو ان کی ضرورت ہوئی تو وہ کھیلنے کا چانس لے سکتے ہیں تاہم ابھی ان کی جگہ کھیلنے والے لڑکے کافی عمدہ پرفارم کررہے ہیں جس کی بہت خوشی ہے۔

، نہ کھیلنے کا دکھ ہوتا ہے تاہم اگر ٹیم اچھا پرفارم کررہی ہو تو اس سے اچھی بات کوئی نہیں ہوسکتی ۔

رونچی ٹائٹل معرکے میں پھر کراچی کنگز کیخلاف مقابلے سے گریزاں

دبئی(بی این پی ) بیٹسمین لیوک رونچی فیصلہ کن معرکے میں ایک بار پھر کراچی کنگز کیخلاف مقابلے سے گریزاں ہیں جن کا کہنا ہے کہ مقامی ٹیم کو فائنل میں شائقین کی زبردست حمایت حاصل ہو گی جس کے سبب وہ دباو¿ کا شکار بھی ہو سکتے ہیں۔ نیوزی لینڈ کے سابق بیٹسمین لیوک رونچی بھی پاکستان میں کھیلتے ہوئے اسی تجربے سے گزرنا چاہتے ہیں جس کا لطف گزشتہ برس کی فائنلسٹ ٹیموں نے لاہور میں اٹھایا تھا ۔

اور مقامی شائقین نے ان کی زبردست پذیرائی کی تھی لیکن وہ اس بات کے حق میں نہیں کہ ان کا سامنا فائنل میں ایک بار پھر کراچی کنگز سے ہو جسے دوسرے ایلی منیٹر میں کامیابی فیصلہ کن معرکے تک پہنچا سکتی ہے اور ایسا ہوا تو اسے کراچی کے شائقین کی بھرپور حمایت حاصل ہو گی جو انہیں پریشر میں بھی مبتلا کر سکتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ وہ اس حقیقت سے واقف ہیں کہ فائنل کی ٹکٹیں محض تین گھنٹے میں فروخت ہو گئی تھیں جس سے مقامی شائقین کی دلچسپی واضح ہے لہٰذا اگر کراچی کنگز فائنل میں نہ پہنچے تو انہیں تھوڑی بہت حمایت مل جائے گی۔ جنوبی افریقہ کے کیپلر ویسلز کے بعد دو آئی سی سی رکن ممالک کی نمائندگی کرنے والے لیوک رونکی دو ہزار سات میں آسٹریلین اے ٹیم کے ساتھ پاکستان میں کھیلنے کا اعزاز رکھتے ہیں تاہم اس وقت ان کے میچز لاہور،فیصل آباد اور شیخوپورہ میں کھیلے گئے تھے جبکہ رونکی کے مطابق پی ایس ایل فائنل بہت بڑا معرکہ ہے۔

صاحبزادہ فرحان فائنل میں یادگاراننگز کھیلنے کے خواہشمند

دبئی(بی این پی ) پی ایس ایل تھری کے پہلے پلے آف میں اسلام آباد یونائیٹڈ کے صاحبزادہ فرحان نے اپنی تین چھکوں سے مرصع 29 رنز کی اننگز کوچ وقار یونس کے نام کر دی ۔ ان کا کہنا تھاکہ اس میچ میں اپنا قدرتی انداز اپنایا اور کوشش ہو گی کہ یہ فارم برقرار رہے کیونکہ وہ اگلا میچ کراچی میں کھیلنے کیلئے پرجوش ہیں۔

نوجوان بیٹسمین کا کہنا تھا کہ ان کے کوچز پلیئرز پر سخت محنت کر رہے ہیں اور اسی وجہ سے وہ اپنی اننگزان کے نام کرتے ہیں۔ صاحبزادہ فرحان کا مزید کہنا تھا کہ جب لیوک رونکی اس انداز سے کھیل رہے ہوں تو انہیں بھی اضافی اعتماد حاصل ہوتا ہے اور انہوں نے سوچ رکھا تھا کہ اگر رونکی آو¿ٹ ہوئے تو ان کی جگہ صورت حال سنبھال لیں گے مگر وہ آو¿ٹ ہی نہیں ہوئے۔

پی ایس ایل سے لطف اندوز ہوا،جلد پاکستان آﺅنگا

دبئی (آئی این پی)کراچی کنگز کے کپتان این مورگن کا کہنا ہے کہ میں پاکستانی پرستاروں سے کہوں گا کہ آپکے درمیان جلدی آﺅں گا۔ اس بار میں نے اپنے اہل خانہ کے ساتھ وقت گذارنے کی وجہ سے معذرت کی تھی لیکن دبئی شارجہ میں ایک ہفتے پی ایس ایل کو بھرپور انجوائے کیا۔ گذشتہ سال بھی ٹورنامنٹ کا بھرپو ر مزہ لیا تھا، ایک ہفتہ پی ایس ایل تھری کا حصہ رہا اور بھرپور لطف اندوز ہوا جبکہ مستقبل میں بھی پی ایس ایل کھیلنے کا خواہشمند ہوں۔ مورگن کا مزید کہنا تھا کہ عارضی کپتانی مشکل ہوتی ہے ،میری نیک خواہشات کراچی ٹیم کے ساتھ ہیں۔

اسلام آباد یونائیٹڈ دوسری مرتبہ ٹائٹل جیت سکتی ہے

دبئی(بی این پی )اسلام آباد یونائیٹڈ کے ہیڈ کوچ ڈین جونز پی ایس ایل تھری کے 9 میچوں میں دس وکٹیں لینے والے پاکستانی فاسٹ بالر محمد سمیع کے گن گانے لگے جن کا کہنا ہے کہ ان کی حالیہ فارم کی بدولت اسلام آباد یونائیٹڈ دوسری مرتبہ ٹائٹل جیت سکتی ہے ۔

جبکہ انہیں کوئی شک نہیں کہ پاکستانی فاسٹ بالر ایک مرتبہ پھر اپنی قومی ٹیم کی جانب سے بلند معیار کی کرکٹ کھیل سکتے ہیں۔ سابق آسٹریلین بیٹسمین ڈین جونز یہ دیکھ کر حیران ہیں کہ محمد سمیع بڑھتی ہوئی عمر کے باوجود سنجیدہ نوعیت کی فاسٹ بالنگ کی اہلیت رکھتے ہیں اور ان کا عمدہ کھیل انٹرنیشنل کرکٹ میں واپسی کا بھی باعث بن سکتا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ کوئی یقین کرے یا نہیں لیکن محمد سمیع کے پاس اب بھی واپسی کا موقع ہے جو مستقبل قریب میں پاکستانی ٹیم کیلئے مفید ثابت ہو سکتے ہیں اور وہ اس بات سے بخوبی واقف ہیں کہ محمد سمیع میں کتنی صلاحیت ہے جو ایک حیران کن ایتھلیٹ کی حیثیت سے اس عمر میں بھی 140 سے 145 کلومیٹرز فی گھنٹہ کی رفتار سے بالنگ کر سکتے ہیں اور اسلام آباد یونائیٹڈ اس کارکردگی کے ساتھ انہیں ہمیشہ کھلا سکتی ہے۔ لاہور قلندرز کیخلاف میچ میں 21رنز کے عوض تین وکٹوں کی بہترین کارکردگی دکھانے والے محمد سمیع کے متعلق ڈین جونز کا کہنا تھا کہ اگر محمد سمیع اسی انداز سے کھیلتے رہے تو انہیں قومی ٹیم میں دیکھ کر قطعی حیرانگی نہیں ہو گی اور اگر کسی کو اس بات کا یقین نہیں آتا تو وہ صرف ایک بار اس میچ کو دیکھ لے جس میں انہوں نے بابر اعظم کو آو¿ٹ کیا تھا۔

ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پر مارلون سیموئلز کی سرزنش

ہرارے( اے پی پی )انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) نے ورلڈ کپ کوالیفائر ٹورنامنٹ میں ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کرنے پر ویسٹ انڈین بلے باز مارلون سیموئلز کی سرزنش کی اور ایک ڈی میرٹ پوائنٹ بھی دے دیا۔ آئی سی سی کی طرف سے جاری کردہ بیان کے مطابق سیموئلز نے آئی سی سی کے آرٹیکل 2.1.8 کی خلاف ورزی کی ہے جس کی وجہ سے ان کی سرزنش کی گئی جبکہ ایک ڈی میرٹ پوائنٹ بھی ان کے کھاتے میں ڈال دیا گیا۔

زمبابوے میں جاری آئی سی سی ورلڈ کپ کوالیفائر ٹورنامنٹ سپر سکس مرحلے میں میزبان ٹیم کے خلاف میچ میں سیموئلز نے آﺅٹ ہونے کے بعد پویلین جاتے ہوئے اپنے بیٹ سے دائرے کی ڈسک کو نقصان پہنچایا جس کی وجہ سے آئی سی سی کے ایمپائرز نے ان کی سرزنش کی۔ واضح رہے کہ سیموئلز نے 86 رنز کی عمدہ اننگز کھیل کر ٹیم کی جیت میں اہم کردار ادا کیا تھا اور میچ کے بہترین کھلاڑی قرار پائے تھے۔

پروٹیز پیسرربادا پر عائد 2میچز کی پابندی ختم

دبئی(آئی این پی)سیاہ فام جنوبی افریقن فاسٹ باﺅلر کگیسوربادا انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی)کی جانب سے دی گئی سزا کے خلاف اپیل جیت گئے، آئی سی سی کوڈ آف کنڈیکٹ اپیل کمشنر مائیکل ہیرن نے ان پر عائد دو میچز کی پابندی ختم کر دی، میچ فیس جرمانے میں 25 فیصد کمی کی گئی جبکہ انہیں ایک ڈی میرٹ پوائنٹ دیا گیا، اس کا مطلب ہے کہ ربادا اب کینگروز کے خلاف آخری دو ٹیسٹ میچز میں ملک کی نمائندگی کریں گے۔آئی سی سی نے کینگروز کے خلاف کھیلے گئے دوسرے ٹیسٹ میں آسٹریلوی قائد سٹیون سمتھ کو کندھا مارنے پر ربادا پر لیول ٹو چارج عائد کیا تھا ۔

جس کے باعث وہ کینگروز کے خلاف آخری دو ٹیسٹ میچز سے باہر ہو گئے تھے تاہم جنوبی افریقن باﺅلر نے سزا کے خلاف اپیل کی تھی۔ آئی سی سی کوڈ آف کنڈیکٹ اپیل کمشنر مائیکل ہیرن نے 19 مارچ کو وڈیو کانفرنس کے ذریعے ان کی اپیل کی سماعت کی جو چھ گھنٹے تک جاری رہی، جنوبی افریقہ کے نامور ایڈووکیٹ دالی موفو نے ربادا کیس لڑا جبکہ فاسٹ باﺅلر ربادا، کپتان فاف ڈوپلیسی اور ٹیم مینجر محمد موسی جی بھی سماعت کا حصہ تھے۔سماعت کے بعد جوڈیشنل کمشنر نے کہا کہ ربادا لیول ٹو چارج کے مرتکب نہیں اسلئے ان پر عائد دو میچز کی پابندی ختم کی جاتی ہے، اس کے ساتھ ساتھ میچ فیس جرمانے میں بھی کمی کر کے 25 فیصد کر دی گئی ہے اور انہیں تین کی بجائے ایک ڈی میرٹ پوائنٹ دیا گیا۔ آئی سی سی چیف ایگزیکٹو ڈیوڈ رچرڈسن نے بھی جوڈیشنل کمشنر کے فیصلے کو قبول کرتے ہوئے کہا کہ اس کے خلاف کوئی اپیل نہیں کریں گے۔ جنوبی افریقہ اور آسٹریلیا کے درمیان تیسرا ٹیسٹ (کل) جمعرات سے شروع ہو گا، دونوں ٹیموں کے درمیان چار میچوں کی سیریز 1-1 سے برابر ہے۔