All posts by Asif Azam

https://www.facebook.com/asif.azam.33821

ٹیم مہنگے ترین کوچنگ سٹاف کے ہمراہ ورلڈکپ مہم سرکریگی

لندن(نیوز ایجنسیاں) موجودہ پاکستانی ٹیم میں تاریخ میں پہلی بار سب سے زیادہ غیر ملکی شامل ہیں، ان میں مکی آرتھر، بیٹنگ کوچ گرانٹ فلاور، ٹرینر گرانٹ لوڈن، فیلڈنگ کوچ بریڈ برن، فٹنس ٹرینر کلف ڈی کون اور ویسٹ انڈین مساجر شامل ہیں۔روانگی سے قبل مکی آرتھر سے جب ورلڈ کپ کے بعد ان کے مستقبل کے بارے میں سوال کیا گیا تو ان کا جواب تھا کہ اس کا انحصار پاکستان کرکٹ بورڈ پر ہوگا۔یاد رہے کہ مکی آرتھر اور دیگر کوچنگ اسٹاف کا معاہدہ ورلڈ کپ تک کا ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ تاریخ کی سب مہنگی کوچنگ ٹیم ہے۔ پی سی بی نے دو سال سے غیر ملکی سپورٹ اسٹاف کے ساتھ ٹیم کی تیاری پر کروڑوں روپے خرچ کئے ہیں۔

۔ اس بار پاکستانی ٹیم کے دو سنیئر کھلاڑی شعیب ملک اور محمد حفیظ اپنا آخری ورلڈ کپ کھیلنے انگلینڈ پہنچے ہیں۔سرفراز احمد نے روانگی سے قبل مختصر بیان میں کہا ہے کہ ٹیم کے لیے دعا کریں ٹیم بھرپور جذبے اور عزم سے میگا ایونٹ میں شرکت کرے گی اور شائقین کو مایوس نہیں کرے گی۔ پاکستان ٹیم کو سپورٹ کرتے رہیں، ٹیم پاکستان توقعات پر پورا اترے گی۔2015 کے ورلڈ کپ کی ٹیم کے اہم کھلاڑی مصباح الحق، یونس خان، شاہد خان آفریدی، عمر اکمل، راحت علی، ناصر جمشید، وہاب ریاض، محمد عرفان، سہیل خان اور احمد شہزاد موجودہ ٹیم میں شامل نہیں ہیں اور پاکستان کرکٹ کے افق سے غائب ہیں۔ہیڈ کوچ وقار یونس کی جگہ مکی آرتھر نے لی ہے۔

حفیظ ورلڈکپ میں بطوراوپنرکھیلنے کے خواہشمند

لاہور (نیوزایجنسیاں)قومی کرکٹ ٹیم کے آل رانڈر محمد حفیظ کا کہنا ہے کہ میں اوپنر ہوں اور اوپنر کی حیثیت سے ہی کھیلنا چاہتا ہوں جبکہ میں ایک ایسا کھلاڑی ہوں جو ہر طرح کے حالات میں ایڈجسٹ ہونا جانتا ہوں۔نجی خبر رساں ادارے کو دئیے گئے انٹرویو میں محمد حفیظ نے کہا کہ ٹیم انتظامیہ نے مجھ سے نمبر چار پر اینکر کا کردار ادا کرنے کو کہا ہے کیونکہ ٹیم میں اب نئے اوپنرز آ گئے ہیں جو دن بہ دن بہتر ہو رہے ہیں اور اچھا کھیل پیش کر رہے ہیں۔ میں پاکستان ٹیم کیلئے کھیلتا ہوں اور جو بھی ٹاسک دیا جاتا ہے اسے بھرپور انداز میں نبھانے کی کوشش کرتا ہوں۔محمد حفیظ نے 2003 میں ایک اوپنر کی حیثیت سے ون ڈے انٹرنیشنل کیرئیر کا آغاز کیا تھا لیکن 2015سے انہیں چوتھے نمبر پر بیٹنگ کروانے کو ترجیح دی جاتی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ چونکہ میں گزشتہ 16,17 سال سے اوپنر کی حیثیت سے کھیل رہا ہوں، اس لئے میں ہمیشہ زیادہ سے زیادہ اوور کھیلنا چاہتا ہوں۔

تاکہ ذمہ داری اٹھاتے ہوئے پاکستان کیلئے میچ جیت سکوں۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ کریز پر سیٹ ہونے کے بعد آپ کو ایک ایسی عمدہ اننگز کھیلنے کی ضرورت ہوتی ہے جو مخالف ٹیم پر برتری حاصل کرنے میں مدد کر سکے۔ آپ صرف کریز پر ٹھہر کر ہی میچ نہیں جیت سکتے بلکہ آپ کو ایک اننگز بلڈ کرنے کی ضرورت ہوتی ہے، اور میرے خیال سے ایسا کرنے کیلئے ہمارے پاس تمام وسائل موجود ہیں۔

عاطف اسلم نے بھارتی میوزک کمپنیوں کے بارے خاموشی توڑ دی

کراچی (شوبزڈیسک)گلوکار عاطف اسلم نے بھارتی انتہا پسندوں کی ہٹ دھرمی اور بھارتی میوزک کمپنی ٹی سیریز کی جانب سے یوٹیوب سے اپنے گانے ہٹائے جانے پر بالآخر خاموشی توڑدی۔ایک انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ بھارت میں مجھے لوگوں سے بہت زیادہ پیار ملتاہے، مجھے ذاتی طور پر اس کی وجہ بالکل نہیں معلوم کہ میرے گانے یوٹیوب سے کیوں ہٹائے گئے اور پھر انہیں کیوں اپ لوڈ کیا گیا۔ پاکستان اور بھارت دونوں ممالک میں میرے چاہنے والے بہت زیادہ ہیں، جن کی تعداد نمبرز میں بھی بہت زیادہ ہے لہذا مجھے لگتا ہے کہ شاید یہ مداحوں کا جواب ہے۔لاکھوں لوگوں کی جانب سے چینل کو ان سبسکرائب کرنے کے بعد یہ خبر آئی کہ ٹی سیریز میوزک کمپنی نے اپنے یوٹیوب چینل پر دوبارہ پاکستانی گلوکاروں کے گانے لگادئیے ہیں۔ عاطف اسلم نے ایک پراسرار خاموشی اختیار کیے رکھی لیکن اب انہوں نے پہلی بار لب کشائی کی ہے۔

گلوکار احمد رشدی کی 81 ویں سالگرہ آج منائی جائے گی

لاہور(شوبزڈیسک)معروف گلوکار احمد رشدی کی 81 ویں سالگرہ 24اپریل بدھ کو منائی جائے گی اس سلسلے میںان کے مداحوں کے زیر اہتمام تقاریب کا اہتمام کیا جائے گا۔ احمد رشدی 1938ءکو حیدر آباد دکن میں پیدا ہو ئے تقسیم ہند کے بعد احمد رشدی کراچی منتقل ہو گئے۔ انہوں نے اپنے فنی کیریئر کا آغاز ریڈیو پاکستان کراچی سے کیا معروف گانے ” بند روڈ سے کیماڑی ،چلی میری گھوڑا گاڑی “ نے انہیں شہرت کی بلندیوں تک پہنچا دیا ۔ ان کی بطور گلوکار پہلی فلم ” کارنامہ “ تھی جو کہ ریلیز نہ ہو سکی جبکہ اس کے بعد آنے والی فلم ” انوکھی “ تھی جس میں احمد رشدی پلے بیک سنگر تھے ان کی بطور فلمی گلوکار آخری فلم ” مشرق و مغرب “ تھی۔ احمد رشدی کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ انہوں نے دیگر گلوکاروں کے ہمراہ مل کر 1955ءمیںپہلی مرتبہ پاکستان کا قومی ترانہ گایا انہیں یہ اعزاز بھی حاصل ہے کہ وہ جنوبی ایشیاءکے پہلے گلوکار تھے جنہوں نے موسیقی میں پاپ سنگنگ کو متعارف کروایا انہوں نے پاکستانی فلموں میں پانچ ہزار سے زائد گانے ریکارڈ کروائے۔ پاکستانی فلمی موسیقی کیلئے انتھک کام کرنے پر ان کی صحت گرنا شروع ہو گئی اور وہ 11اپریل1983ءکو دل کے دورے کے باعث 44برس کی عمر میں انتقال کر گئے۔
انہیں سخی حسن قبرستان کراچی میں سپردخاک کیا گیاان کی وفات کے بیس برس بعد ان کی خدمات کے عوض سابق صدر جنرل(ر) پرویز مشرف نے انہیں ستارہ امتیاز سے نوازا تھا۔

ایرانی قیادت پاکستان کے بارے میں کیا سوچ رہی ہوگی:مریم نواز

اسلام آباد( آن لائن ) سابق وزیراعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز نے وزیراعظم عمران خان کے ایران کیخلاف پاکستانی سرزمین استعمال ہونے کے
بیان پر اپنے ٹویٹ میں کہا ہے کہ غیر ملکی سرزمین پر ملک کو رسوا کرنے کی قومی و سفارتی تاریخ میں مثال نہیں ملتی ۔ ایرانی قیادت پاکستان کے بارے میں کیا سوچ رہی ہوگی۔ اپنے ٹویٹر پر جاری پیغام میں مریم نواز نے کہا کہ غیر ملکی سرزمین پر ملک کو رسوا کرنے کی قومی و سفارتی سطح پر نظیر نہیں ملتی وزیراعظم عمران خان کے ایران کیخلاف پاکستانی سرزمین استعمال ہونے کے اعتراف پر ایرانی قیادت پاکستان کے بارے میں کیا سوچ رہی ہوگی۔

چودھری نثار کو وزیراعلیٰ بنانے کا فیصلہ نواز شریف کرینگے: شاہد خاقان عباسی

اسلام آباد (صباح نیوز) پاکستان مسلم لیگ (ن) کے سینئر رہنما اور سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ جو معیشت کی حالت پی ٹی آئی حکومت نے کر دی ہے اس میں ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ ہوں یا کوئی اور جو بھی نیا وزیر خزانہ آئے گا وہ مزید خرابی ہی پیدا کرے گا۔ اسدعمر نے ملکی معیشت کو کتنا فائدہ پہنچایا ہے یا نقصان پہنچایا ہے یہ کیس نیب کو دے دیں، نیب یہ سب کام کرتی ہے اور نیب یہ سب کام جانتی ہے کہ کون فائدہ پہنچاتا ہے اور کون نقصان پہنچاتا ہے۔ ملکی مسائل کا مجھے اور کوئی حل نظر نہیں آتا اور ہمیں دوبارہ الیکشن میں جانا پڑے گا۔ سب اس بات کا عہد کریں کہ ملک میں شفاف الیکشن کروائیں گے، پاکستان کی عوام جو فیصلہ کریں گے سب اس کو قبول کریں گے ۔ لوگوں کی رائے سے بہتر کوئی رائے نہیں ہے ، کسی کوحق حاصل نہیں ہے ، نہ کسی کے پاس یہ اختیار ہے ، نہ کسی میں اتنی قابلیت ہے کہ وہ یہ کہہ سکے کہ ملک کے عوا م کا فیصلہ درست نہیں ہے میرا فیصلہ درست ہے اور جب بھی ہم نے یہ کیا ہے ہم نے نقصان اٹھایا ہے۔ چوہدری نثار اگر وزیر اعلیٰ پنجاب کے امیدوار بنتے ہیں تو ان کی حمایت کا فیصلہ (ن) لیگ کی پارلیمانی پارٹی کرے گی ، پارٹی کی قیادت کرے گی اور میاں محمد نواز شریف کریں گے۔ نواز شریف کو علاج کی ضرورت ہے اور یہ حقیقت ہے کہ ان کا علاج شاید پاکستان میں ممکن نہ ہو۔ نواز شریف کو پرانی بیماری ہے جو وقت کے ساتھ بڑھ گئی ہے اوراس میں مزید پیچیدگیاں پیدا ہو گئی ہیں۔

بھٹو کے نواسے بلاول کو غیر اخلاقی زبان استعمال نہیں کرنی چاہیے ،چینل ۵ کے پروگرام ” کالم نگار “ میں گفتگو

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) چینل فائیو کے تجزیوں اور تبصروں پر مشتنل پروگرام ”کالم نگار“میں گفتگو کرتے ہوئے تجزیہ کار ناصر اقبال نے کہا کہ وزیراعظم کے جاپان اور جرمنی کی سرحدی تجارت کابیان عمران خان کی غلطی ہے انہیں اپنی غلطیاں سدھارنی چاہئیں ۔ کنٹینرکے بیانات اور بات ہے مگروزیراعظم کی گفتگو انکے منصب کے شایان شان ہونی چاہئیے۔ عمران خان کو کامیاب ہونا چاہیے، اگر وہ ناکام ہوئے تو تمام مافیاز پاکستان کو دوبارہ جکڑ لیں گی۔افغانستان کے حوالے سے وزیراعظم کے بیان پر افغانستان سے سخت ردعمل آچکا ہے اور بھارت کے حوالے سے ایک انٹرویو میں انکے بیان پر اپوزیشن نے وزیراعظم پر مودی کی کمپین کرنے کا الزام لگایا۔ وزیراعظم کواپنے ساتھ تقریر لکھنے کے لیے ماہر لوگ رکھیں۔ کہاں جاپان اور کہاں جرمنی! وزیراعظم اپنے بیان کی تردید کریں گے تو انکا مذاق بنے گا۔ ایٹمی ملک کے وزیراعظم کی بات کا زیر زبر بھی وزن رکھتا ہے۔وزیراعظم اور وزیر خارجہ کے بیانات میں تضاد بھی سوالیہ نشان ہے۔تحریک انصاف کو غیر روایتی مافیا پر مشتمل اپوزیشن کا سامنے ہے اور تحریک انصاف انتظامی حوالے سے صفر ہے۔تحریک انصاف کے پاس اپنا چہرہ اپنا ترجمان ہی نہیں ہے۔ فواد چوہدری جیسے مہمان اداکارقوم کو اعتماد میں نہیں لے سکتے کہ تحریک انصاف کی حکومت قرض کے انبار پر قابو پارہی ہے۔پنجاب کی وزارت اعلیٰ سے مطعلق ہذیان کی کیفیت پر بیوروکریسی کو حکومت نے اعتماد میں لینا ہے۔بااثر مافیا سے نمٹنے کے لیے وزیراعلیٰ لاہور سے ہونا چاہیے۔میاں اسلم اقبال وزیر اعلیٰ کے لیے بہترین نام ہیں۔ ریاست کو پشاور میں پولیو مہم کیخلاف ڈرامہ رچانے والے کردار کو نشان عبرت بنا دینا چاہیے۔ میزبان کالم نگار کاشف بشیر خان نے کہا کہ بے نظیر اور ذوالفقار علی بھٹو لیڈر تھے اور لکھ کر تقریر نہیں کرتے تھے، عمران خان کو اس معاملے پر بطور وزیراعظم سوچنا پڑے گا۔ عمران خان کو یورپی ممالک کی مثالیں دینے سے گریز کرتے ہوئے اب اپنی بات کرنی چاہیے۔ آکسفورڈ کے پڑھے ہوئے، بھٹو کے نواسے کوغیر اخلاقی زبان استعمال نہیں کرنی چاہیے۔گذشتہ چند سالوں میں پاکستان مخالف سرگرمیاں ایران کی سرزمین سے ہوتی رہی ہیں۔ ایران کی ہمارے دشمن کیساتھ زیادہ محبت ہے۔تحریک انصاف کے پاس قانونی نظام میں تبدیلی کے لیے دو تہائی اکثریت نہیں ہے۔ کالم نگار مریم ارشد نے کہا کہ عمران خان نے شاید فرانس کی جگہ جاپان کہہ دیا تاہم اس بیان پر جواب وزیراعظم ہی دے سکتے ہیں۔ اپوزیشن اصل مدعا پر آنے کی صلاحیت نہیں رکھتی، مفاد پرست لوگوں کو عمران خان کی غلطی کا فائدہ اٹھانے کا موقع مل گیا۔ امریکا دنیا کا خداوند بنا ہوا ہے۔ بھارت ایران سے سستے داموں تیل اور گیس خرید رہا ہے اور امریکا خاموش ہے۔گذشتہ 60سالوں میں تعلیم پر کام ہوتا تو آج کرپشن کا رونا نہ ہوتا۔تحریک انصاف میں صرف ایک چہرہ عمران خان ہے باقی سب دوستیاں نبھا رہے ہیں۔ کالم نگارحسنین اخلاق نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کو چاہیے کہ وہ مختصر اور ٹھوس گفتگو کریں، دہشتگردی کے حوالے سے عمران خان کے بیان پر ہمارے دشمن بھارت اور عالمی نشریاتی اداروں نے اسی قسم کا مطلب اخذ کیا تھا۔ بلاول بھٹو کی اسمبلی میں بیان بازی کنٹینر کی بیان بازی سے کم غیر اخلاقی تھی۔ پاکستان کا قومی بیانیہ عمران خان کے بیان سے بالکل مختلف ہے۔احتساب کا عمل مذاق نہیں عدالتوں پر یقین رکھنا چاہیے۔تحریک انصاف کی حکومت میں ذاتی مفادات کی سیاست ہورہی ہے۔ حکومت گڈ گورننس کرنا چاہتی ہے تو انہیں خود کوشش کرنی ہوگی، اپوزیشن انہیں کبھی نہیں کرنے دے گی۔ حکومت سنجیدہ ہے تووعدے کے مطابق سسٹم کی تعمیر نو کرے۔ قانونی و سیاسی نقطہ نظر سے علیم خان کی ضمانت ہوجانی چاہیے، وہ اتنے گنہگار نہیں ہیں۔ پشاور کی عوام کا پی آر ٹی پر غصہ تھا جو پولیو مہم پر اتر گیا۔