تازہ تر ین

حکم امتناعی کے باوجود با اثر افراد کا محنت کش خاندان کے زرعی رقبہ پر قبضہ ، ” خبریں ہیلپ لائن “ میں انکشاف

خان پور(نمائندہ خبریں) حکم امتناعی کے باوجود بااثر افرادمحنت کش خاندان کے زرعی رقبہ جات پر قابض،پولیس کی زیر نگرانی فصل کی کٹائی وفروخت کا سلسلہ جاری ،مبینہ نوٹوں کی چمک سے پولیس کا عدالتی حکم ماننے سے بھی صاف انکار،کاروائی کے لئے درخواستیں دینے پر ایس ایچ او کی ا±لٹامتاثرین کو تھانے بندکرنے کی دھمکیاں ،قبضہ مافیا کے ارکان علاقہ میں دہشت کی علامت بن گئے ،متاثرین کے گھر گھس کر اہلخانہ کا تشدد روز کا معمول علاقہ بدر نہ ہونے پر جان سے مارنے کی دھمکیاں،تفصیلات کے مطابق تھانہ ظاہرپیرکے علاقہ موضع ملک پو رکی بستی کے رہائشی اغوا ،چوری ،ڈکیتی اور اراضی پر قبضوں کے کئی واقعات میں ملوث جرائم پیشہ افراد ربنواز،خالد اور عابد نے تھانہ ظاہر پیر کے ایس ایچ او سیف اللہ کورائی کو بھی مبینہ طور پر بھاری رشوت دیکر خرید لیا ہے جس نے عدالتی احکامات بھی نذر انداز کرنا معمول بنا لیا ،پچھلے دنوں جرائم پیشہ گروہ کے سرغنہ ربنوازاوراس کے ساتھی خالد اور عابد وغیرہ نے موضع ملک پو رکی بستی نون کے غریب محنت کش جمیل احمدکی اراضی پر ناجائز طورپر قبضہ کرنے کیلئے دھاوا بولا تو انہوں نے پولیس تھانہ ظاہر پیرسے مدد مانگی لیکن پولیس کی جانب سے کسی قسم کی مدد نہیں کی اس دوران قبضہ مافیا کے ان ارکان نے اندھا دھند فائرنگ کرکے علاقہ میں دہشت کی علامت بن گئے لیکن اس کے باوجود پولیس ملزمان پر مہربان ہوگئی اور ان کے خلاف کسی قسم کی کاروائی عمل میں نہیں لائی جب کے اس سے قبل جمیل احمدنے عدالت سے حکم امتناعی بھی حاصل کررکھا تھاجو ظاہر پیر پولیس کو دکھایا گیا لیکن ظاہر پیر پولیس نے عدالت کے اس حکم کو ماننے سے بھی صاف انکار کردیامتاثرہ جمیل احمدنے کہاکہ ربنواز وغیرہ نے میرے گھر گھس کر مجھ سمیت میرے تمام اہلخانہ پر قاتلانہ حملہ کیا ہے جس کی وجہ سے ہم اہلخانہ نے نامعلوم مقام پر پناہ لے رکھی ہے،انہوں نے بتایا کہ ہم جب بھی اپنے گھر گئے تو قبضہ مافیا کے ارکان ہم پر حملہ آور ہوکر ہمیں علاقہ بدر کردیتے ہیں جس کی وجہ سے مجھے اورمیرے تمام اہلخانہ کو جان کا خطرہ ہے کیونکہ پولیس پیسوں کی لالچ میں ان جرائم پیشہ عناصر کا ساتھ دے رہی ہے انہوں نے کہاکہ ہم کئی بار خو دپر قاتلانہ حملے کی درخواستیں ا ور اپنی اراضی کا حکم امتناعی لے کر ایس ایچ او تھانہ ظاہر پیر سیف اللہ کورائی کے پاس گئے لیکن وہ یہ کہہ کر کاروائی سے صاف انکار کردیتاہے کہ میں کسی عدالت کے حکم کو نہیں مانتا جو عدالتی حکم مانتے ہیں وہ پولیس افسر کمزور ہوتے ہیں ،ادھر متاثرہ خیر محمد نے بتایاکہ ربنواز وغیرہ نے میری پانچ کنال گیارہ مرلے رقبہ پر ناجائز طورپر قبضہ کررکھاہے کئی بارایس ایچ او سیف اللہ کورائی کے پاس ارداس لے کرگیا لیکن انہوں نے مجھے الٹادھکے دیکر تھانہ سے نکال دیا اور یہ بھی کہہ دیا کہ ربنواز کی مخالفت آپ کو مہنگی پڑے گی جبکہ شفیق احمد نے بتایا کہ میری4کنال 10مرلے رقبہ اراضی پر ربنواز وغیرہ قابض ہیں اور یہ قبضہ ربنواز وغیرہ نے مقامی پولیس کی سرپرستی میں کیا ہے اسی طرح جام عبدالحمید کی 2کنال 9مرلے اور خلیل احمد کی 28کنال اراضی پر یہی قبضہ گروپ ناجائز طورپر قابض ہے لیکن پولیس ان کے سامنے بے بس چلی آرہی ہے،یہ قبضہ گروپ پولیس کی سرپرستی کی وجہ سے علاقہ میں دہشت کی علامت بنا ہوا ہے اور جس کو چاہیں پولیس کی نگرانی میں علاقہ بدر کردیتا ہے، متاثرین نے وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار اور آئی جی پنجاب سے کرپٹ اور راشی افسیرسیف اللہ کورائی کے خلاف سخت ترین نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔



خاص خبریں


ziazia shahid

سائنس اور ٹیکنالوجی



تازہ ترین ویڈیوز



HEAD OFFICE
Khabrain Tower
12 Lawrance Road Lahore
Pakistan

Channel Five Pakistan© 2015.
© 2015, CHANNEL FIVE PAKISTAN | All rights of the publication are reserved by channelfivepakistan.tv