تازہ تر ین

زینب قتل کیس ،پوسٹمارٹم رپورٹ میں حقیقت نظر انداز ۔۔۔ ملزم عمران علی نہیں حقیقت کچھ اور ہی نکلی

لاہور (ویب ڈیسک)کسی جرنلسٹ نے زینب کی پوسٹمارٹم رپورٹ پڑھنے کی کوشش نہیں کی ،کیونکہ اس میں باقاعدہ لکھا ہے کہ زینب کیساتھ متعدد بار زیادتی کی گئی اور مختلف افراد نے کی جبکہ ہمارے حکمران اور انتظامیہ ایک بندے کو پکڑ کر پورا کیس بند کرنیکی کوشش کر رہے ہیں ۔ملزم عمران کا بیان میڈیا پر دکھا یا گیا کہ اس نے جب اغوا کیا ڈیڑھ گھنٹے بعد قتل کر دیا تھا اور لاش کو بستر میں چھپا دیا گیا جبکہ زینب کی نعش 9تاریخ کو ملی اور 4جنوری کو اغوا ہوئی یعنی پانچ دن کے بعد اس کی نعش ہسپتال منتقل ہوئی پوسٹ مارٹم ہوا اس کے بعد اس کے عمرہ پر گئے والدین کا انتظار کیا گیا 11جنوری کو نماز ہ جنازہ ہوئی بچی کی تصاویر دیکھیں کیا وہ نعش 7دن پرانی تھی بالکل نہیں یہ ایک حقیقت ہے کہ مرنے کے تقریبا 36گھنٹے بعد فضلہ جات بھی خارج ہونے لگتے ہیں رگوں میں خون کا بہاﺅ رک جانے کے بعد کشش ثقل اس خون کو نیچے کی طرف کھینج لیتی ہے نتیجے کے طور پر سر خ جلد پیلی پر جاتی ہے جگہ جگہ سر خ دھبے دکھائی دیتے ہیں کھال سکڑ جاتی ہے ،جسم کی حالت بگڑنے لگتی ہے یہاں تک ساتویں دن جسم میں کیڑے پیدا ہونے لگتے ہیں جبکہ زینب کی نعش میں ایسا کچھ نہیں تھا تصاویر نکال کر دیکھ لیں پوسٹ مارٹم رپورٹ بھی یہی بتایا گیا کہ نعش ایک دن پرانی ہے اب حکومت یہ بتائے کہ زینب کو زندہ اتنے دن کہاں رکھا گیا ۔اصل میں وجہ جگہ نہیں مل رہی وہ مکان نہیں مل رہا جس کو وہ جائے وقوعہ ظاہر کریں کیونکہ اگر اصل مقام بتا یا تو پورا گینگ پکڑا جائے گا ۔


خاص خبریں


Pemra.jpg

سائنس اور ٹیکنالوجی



تازہ ترین ویڈیوز



HEAD OFFICE
Khabrain Tower
12 Lawrance Road Lahore
Pakistan

Channel Five Pakistan© 2015.
© 2015, CHANNEL FIVE PAKISTAN | All rights of the publication are reserved by channelfivepakistan.tv